دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کو تاریخ فراموش نہیں کر سکتی ،شہباز شریف

دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کو تاریخ فراموش نہیں کر سکتی ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے لندن میں برطانیہ کے سیکرٹری خارجہ فلپ ہیمنڈسے ملاقات کی۔اس اہم ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے خطے کی صورتحال کے علاوہ سکیورٹی امور ، تعلیم ، صحت ،انرجی سمیت کئی معاملات پر تبادلہ خیالات کیا۔ ملاقات میں صوبائی وزیر خزانہ عائشہ غوث پاشا،رکن قومی اسمبلی مخدوم خسروبختیاراوروزیراعلی کے مشیر عزم الحق بھی شریک تھے۔محمد شہباز شریف نے ملاقات کے دوران کہا کہ وزیراعظم محمد نواز شریف کی حکومت کے دوران پاک برطانیہ تعلقات میں خاطرخواہ وسعت اور گہرائی آئی ہے۔ دونوں ملکوں میں زندگی کے مختلف شعبوں میں تعاون بڑھا ہے اور تجارت میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم برطانیہ اور پاکستان کے درمیان تجارتی حجم کو بلین ڈالرسالانہ تک لے جانے کی کوشش کررہے ہیں۔ وزیراعلی نے کہا کہ دہشت گردی تمام اقوام عالم کا مشترکہ مسئلہ ہے اور اسے مشترکہ کوششوں سے ہی حل کیا جاسکتا ہے۔ دہشت گردوں کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے لئے تمام متاثرہ اقوام کو ایک دوسرے کے ہاتھوں میں ہاتھ دینا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات ختم ہورہے ہیں لیکن اس کے لئے پاک فوج اور عوام نے اپنی بیش قیمت جانوں کے نذرانے دیئے ہیں اور تاریخ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کو فراموش نہیں کرسکتی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں دیرپا امن کے قیام کے لئے سنجیدہ کوششیں کررہا ہے ۔ ہم نے افغانستان کو یقین دلایا ہے کہ افغانستان کا کوئی دشمن پاکستان کا دوست نہیں ہوسکتا۔ وزیراعلی نے کہا کہ پنجاب میں تعلیم اور صحت کے شعبوں میں گرانقدر تعاون پر ہم حکومت برطانیہ کے شکرگزار ہیں۔ فلپ ہیمنڈنے دہشت گردی اور انتہاپسندی کے خاتمے کے لئے پاکستان کی قربانیوں اور کوششوں کی تعریف کی۔انہوں نے پنجاب میں مختلف شعبوں میں عوامی فلاح و بہبود کے پروگراموں اور منصوبوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ ترقیاتی میدان میں پنجاب درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے۔بعدازاں وزیراعلی کی موجودگی میں ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ اتھارٹی(ٹیوٹا) اور برطانیہ کے دو اداروں کے درمیان مختلف معاہدوں پردستخط کئے گئے۔ پنجاب کی طرف سے چیئرپرسن ٹیوٹا عرفان قیصر شیخ نے دستخط کئے۔ صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہوداحمدبھی اس موقع پر موجودتھے ۔ وزیراعلی نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کی 60فیصد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے جنہیں تربیت دیئے بغیر ترقی کے عمل کا حصہ نہیں بنایا جاسکتا۔حکومت پنجاب چاہتی ہے کہ ہمارے نوجوان پڑھ لکھ کر معاشرے پر بوجھ بننے کی بجائے ملک کا بوجھ بٹائیں۔پنجاب میں پہلی مرتبہ نوجوانوں کی فنی تربیت کا وسیع تر پروگرام تشکیل دیا گیا ہے۔ہم نوجوانوں کوایسے شعبوں میں تربیت دے رہے ہیں جس کی پاکستانی صنعت اور تجارت کو ضرورت ہے۔لڑکیوں کو فنی تربیت دینے کے لئے بھی خصوصی فنڈ رکھے گئے ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ معاشرے سے تعصب عدم برداشت اور انتہا پسندی کی آگ کو ٹھنڈا کئے بغیر پاکستان کو قائد اعظم محمد علی جناح ؒ کا پاکستان نہیں بنایا جا سکتا۔ انہوں نے کہ محمدعلی جناحؒ کے ویژن کے مطابق ایک ایسا پاکستان بنانا چاہتے ہیں جہاں ہر شہری کومساوی حقوق حاصل ہوں اور جہاں ہر شخص مذہب‘ عقیدے‘ رنگ اور نسل کی تمیز کے بغیر محض اپنی صلاحیتوں کی بنیاد پرمقام حاصل کر سکیں۔وہ یہاں رائل انسٹی ٹیوٹ آف انٹرنیشنل افیئرز کے زیراہتمام ایک فکری نشست سے خطاب کر رہے تھے جس کی میزبانی کے فرائض بی بی سی ورلڈ کے اینکر اور عالمی شہرت کے حامل مصنف بینٹ جونزنے ادا کئے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پیرس میں ہونے والے دہشت گردی کے واقعہ کی کھلی مذمت کرتے ہیں۔ اس بربریت نے تمام دنیا کو ہلاکر رکھ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 80ء کی دہائی کے دوران کمیونزم اور اسلام کی نام نہاد جنگ میں پاکستان کو فرنٹ لائن سٹیٹ بنا دیا گیا اور پھرجب سوویت یونین افغانستان سے گیا تو پاکستان کو اس کے حال پر چھوڑ دیا گیا۔ ہمیں اس جنگ کے نتیجے میں کلاشنکوف اور ہیروئن کلچر اور دہشت گردی کے سوا کچھ نہ ملا۔ پاکستان کو 30 افغان مہاجرین کا بوجھ اٹھانا پڑا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ 2013ء میں عوام نے ہماری ماضی کی خدمات کے پیش نظر منتخب کیا اور انشاء اللہ ہم اب بھی عوام کی توقعات پر پورا اتریں گے اور ہمیں یقین ہے کہ 2017 ء اور 2018ء کے دوران ہم لوڈشیڈنگ پر قابو پا لیں گے۔ اس وقت ہماری سالانہ شرح ترقی 2فیصد سالانہ کا نقصان ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرب عضب کے نتیجے میں دہشت گردوں کا زور ٹوٹ گیا ہے لیکن دہشت گردی کے خلاف جنگ کوئی آسان جنگ نہیں۔ ہمیں راستے کی مشکلات کا اندازہ ہے۔ ہماری نیت صاف اور ارادے بلندہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے بہتر مستقبل کا انحصار اداروں کی مضبوطی اور جمہوریت کے تسلسل میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ دسمبر میں پشاور میں ہونے والے سانحہ پاکستان کے لئے فیصلے کی گھڑی ثابت ہوا اور پورا ملک دہشت گردی کے خلاف یکسو ہو گیا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ نفرت انگیز تقریریں کرنے‘ وال چاکنگ اور اسلحہ کی نمائش پر سخت سزاؤں کے لئے قانون سازی کی گئی ہے۔ جہلم میں ہونے والے واقعہ کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ حکومت کسی شخص کے ساتھ ناانصافی نہیں ہونے دے گی اور زیادتی کا مرتکب کو ئی شخص سزا سے نہیں بچ سکے گا۔

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ ایڈز کے مرض پر قابو پانے کیلئے مشترکہ کاوشوں کو بروئے کار لانا ہے۔ پنجاب حکومت ایڈز کی روک تھام پر سالانہ خطیر رقم خرچ کر رہی ہے۔ایڈز پر قابو پانے کیلئے اقوام متحدہ کے ایڈز کنٹرول پروگرام کی حکمت عملی پر کام کیا جا رہا ہے۔ایڈز کے حوالے سے مفت مشاورت، تشخیص اور علاج کے لیے مراکز کام کر رہے ہیں۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے ایڈز سے بچاؤ کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا کہ ایڈز قابل علاج مرض ہے، ایڈز کے مریض کو مرض چھپانے کی بجائے علاج معالجے کیلئے قائم سنٹر سے رجوع کرنا چاہیئے۔ ایڈز سے بچاؤ کیلئے لوگوں میں شعور اجاگر کرنے کیلئے آگاہی مہم چلانے کی ضرورت ہے۔ ایڈز کی روک تھام کیلئے حکومت کے ساتھ سول سوسائٹی اور سماجی تنظیموں کو مشترکہ جدوجہد کرنا ہوگی۔ انہو ں نے کہا کہ حفاظتی اقدامات اختیار کرکے بھی ایڈز سے بچا جا سکتا ہے۔ صوبے میں محفوظ انتقال خون یقینی بنانے کیلئے بلڈسکریننگ کو لازم قرار دیا گیا ہے۔ پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام کے تحت مریضوں کو مفت ادویات اور ٹیسٹوں کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ تعلیم اور صحت کے شعبوں میں جامع اصلاحات سے غریب اور امیر کا فرق ختم کرنا چاہتے ہیں۔ لندن میں ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈیفڈ) کے زیراہتمام اعلیٰ سطح اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہا کہ حکومت پنجاب تعلیم اور صحت کے لئے اربوں روپے خرچ کر رہی ہے تاکہ جامع اصلاحات کے ذریعے تعلیم اور صحت کے شعبوں میں غریب اور امیر کو حاصل سہولتوں کا فرق ختم کیا جا سکے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب میں تعلیم اور صحت کے شعبوں کی مانیٹرنگ اور عملے کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے سمارٹ فون کے ذریعے انفارمیشن ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت پنجاب کے انڈومنٹ فنڈ کی بدولت وسائل نہ رکھنے والے ایک لاکھ سے زائد شہری اعلیٰ تعلیم حاصل کر کے ڈاکٹر‘ انجینئر اور پیشہ ور ماہربن کر ملک کی خدمت کر رہے ہیں۔ پنجاب حکومت کی واؤچر سکیم کے ذریعے 18لاکھ طلبہ کو پرائیویٹ سکولوں میں معیاری تعلیم کی سہولت حاصل ہے۔ ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈیفڈ) کے نمائندہ برائے پنجاب سربراہ سرمائیکل باربر نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم اور صحت کے شعبوں میں حکومت پنجاب کا اصلاحاتی پروگرام وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کے ویژن‘ محنت اور براہ راست نگرانی کا مرہون منت ہے۔ وزیراعلیٰ کی ذاتی دلچسپی کی وجہ سے پنجاب اور ڈیفڈ کا تعاون مثالی حیثیت حاصل کر چکا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -