ملک میں خون سستا اور اشیاء خودرنوش مہنگی ہیں ،صاحبزادہ زبیر

ملک میں خون سستا اور اشیاء خودرنوش مہنگی ہیں ،صاحبزادہ زبیر

  

حیدرآباد(بیورو رپورٹ )جمعیت علماء پاکستان (نورانی) کے صدر ملی یکجہتی کونسل کے سربراہ ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے کہا ہے کہ کشکول توڑنے کے دعویداروں نے 2سال میں 18ارب روپے کے قرضے لے کرآئی ایم ایف کے کہنے پر5ماہ بعد ہی منی بجٹ کا عذاب قوم پر مسلط کردیا ہے جس سے غربت مہنگائی اور بیروزگاری جیسے بنیادی مسائل میں پھنسی ہوئی عوام کا جینا دوبھر ہو گیا ہے غربت کے خاتمہ کا نعرہ لگا کر اقتدار میں آنے والی جماعت نے غریبوں کا استحصال کیاہے، ہوشربا مہنگائی کے ہاتھ پریشان غریب عوام کونان جویں سے بھی محروم کردیاہے ،بے روزگار نوجوان ڈگریاں لئے دربدر ٹھوکریں کھا رہے ہیں وفاقی بجٹ کی ستائی ہوئی عوام پر313بنیادی اشیاء دودھ ،مکھن ،پھل ،گوشت ٹوٹھ پیسٹ،شہید انناس ،مالٹے،مکئی،جیسی اجناس پر 10فیصد ڈیوٹی لگا دی گئی جس سے مہنگائی میں بے تحاشہ اضافہ ہو گیا ہے اور اشیاء خوردونوش غریب عوام کی پہنچ سے دور ہوگئی ہیں انہوں نے کہا کہ ہم اس منی بجٹ کو مسترد کرتے ہیں جو آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کی ایماء پر سود ی نظام کو جاری رکھتے ہوئے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیاہے جس سے غریب عوام کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا ہے ،بجلی پیٹرول اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیلئے سمریاں بھجی جارہی ہیں جس سے مزید مہنگائی کا طوفان آئے گا اور عوام کی مشکلات مزید بڑھ جائینگی انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں خون سستا اور اشیاء خودرنوش مہنگی ہیں جس سے عوام کا معیار زندگی بلند ہونے کی بجائے پستی کی جانب جا رہا ہے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -