شہریوں کے لئے مشکلات پیدا کرنے والی تجاوزات برقرار رکھنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی،ہائی کورٹ

شہریوں کے لئے مشکلات پیدا کرنے والی تجاوزات برقرار رکھنے کی اجازت نہیں دی ...
شہریوں کے لئے مشکلات پیدا کرنے والی تجاوزات برقرار رکھنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی،ہائی کورٹ

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ شہریوں کے لئے ٹریفک مسائل کا باعث بننے والی ناجائز تجاوزات کو برقرار رکھنے کی کسی صورت اجازت نہیں دی جاسکتی،مسٹر جسٹس منصور علی شاہ نے یہ ریمارکس شکر گڑھ میں ملکیت کے دعویدار23پھل و سبزی فروشوں کی گرائی جانے والی دکانوں کی ملکیت کا ریکارڈ حکومت سے طلب کرتے ہوئے دیئے۔درخواست گزاروں کے وکیل سعد رسول نے موقف اختیار کیا کہ حکومت سے 2004  میں درخواست گزاروں نے چھمال روڈ پر واقع دکانیں خریدیں جن کی اصل رجسٹریوں سمیت دیگر ریکارڈ موجود ہے،انہوں نے کہا کہ 2013 میں بغیر نوٹس دئیے بلاجوازدکانیں مسمار کرکے ذریعہ روزگار چھین لیاگیا،جبکہ بااثر افراد کی مداخلت پرہائی وے سڑک پر بنائی گئی132 دکانو ں کو گرانے کے لئے نوٹس دینے کے باوجود نہیں گرایا گیا جس پر فاضل عدالت ریمارکس دئیے کہ شہریوں کیلئے ٹریفک مسائل کا باعث بننے والی ناجائز تجاوزات کو برقرار رکھنے کی کسی صورت اجازت نہیں دی جاسکتی۔ اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب انوار حسین نے عدالت کو بتایا کہ سرکاری جگہ پر بنائی گئی دکانیں سڑک کی توسیع کیلئے گرائی گئی ںجبکہ دکانوں میں موجود ان کے سامان کا نقصان بھی نہیں ہونے دیا گیاجبکہ ڈی سی او نارووال کو ان دکانداروں کو متبادل جگہ دینے کیلئے سمری بھجوائی جاچکی ہے۔ملکیت کاریکارڈ طلب کرتے ہوئے فاضل عدالت نے سماعت 12 دسمبر تک ملتوی کردی۔

مزید :

لاہور -