بھارت کے پہلے طیارہ بردار بحری جہاز میں خامیوں کا انکشاف، دفاع کیلئے میزائل نظام نہیں، جنگی طیاروں کے اڑنے واترنے کی صلاحیت بھی محدود

بھارت کے پہلے طیارہ بردار بحری جہاز میں خامیوں کا انکشاف، دفاع کیلئے میزائل ...
بھارت کے پہلے طیارہ بردار بحری جہاز میں خامیوں کا انکشاف، دفاع کیلئے میزائل نظام نہیں، جنگی طیاروں کے اڑنے واترنے کی صلاحیت بھی محدود

  


کراچی (ویب ڈیسک)بھارت کے پہلے طیارہ بردار بیڑے نے امریکی امیدوں پر پانی پھیر دیا۔امریکی اخبار’وال سٹریٹ جرنل‘ نے بھارت کے تیار کردہ پہلے جنگی بحری بیڑے کی خامیوں کا انکشاف کرتے ہوئے لکھا کہ بیڑے میں اپنے دفاع کے لیے کوئی میزائل نظام نہیں۔

’تمہاری اس بات کا مطلب کیا ہے؟ صاف صاف جواب دو‘ طیب اردگان کی وہ بات جس نے روسی صدر پیوٹن کو غصے سے آگ بگولا کردیا، دوٹوک جواب مانگ لیا

اس بیڑے سے جنگی طیاروں کے اڑنے اور اترنے کی صلاحیت محدودہے، طیارہ بردار جہاز کو جنگ میں کیسے استعمال کیا جائے گا اس کی کوئی حکمت عملی نہیں بتائی گئی، امریکی حکام اس صورت حال کو دیکھ کر پریشان ہیں جو بھارت کو چین کے خلاف ایک مضبوط دفاعی دیوار سمجھ بیٹھے تھے۔ روزنامہ جنگ کے مطابق امریکی اخبار لکھتا ہے کہ اعلیٰ امریکی بحریہ کے انجینئرز نے حال ہی میں بھارت کے مقامی طیارہ بردار جہاز کا معائنہ کیا جو یہ توقع لیے بیٹھے تھے کہ بحر ہند میں چین کے بڑھتے ہوئے رسوخ کا مقابلہ کرنے کےلئے یہ بیڑہ مدداورجنگ کے لئے تیار ہے تاہم معائنے کے بعد انہیں دھچکا لگا کہ ایک دہائی کے بعد بھی یہ بیڑہ آپریشنل نہیں ہوا اور اس میں کئی طرح کی خامیاں ہیں۔ بھارتی سرکاری آڈٹ نے بھی یہ انکشاف کیا تھا کہ مقامی طیارہ بردار جہاز’آئی این ایس وکرانت ‘توقعات پر پورا نہیں اترا۔

مزید : بین الاقوامی