دہشتگردی کے خاتمے کیلئے قبائلی عوام کا تعاون ناگزیر: بریگیڈیئر آغا خرم رضا

دہشتگردی کے خاتمے کیلئے قبائلی عوام کا تعاون ناگزیر: بریگیڈیئر آغا خرم رضا

  



ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان میں امن کو سبوتاژ کرنے والے تخریب کاروں کی مزموم عزائم کو ناکام بنانے کیلئے مقامی قبائلیوں کے تعاون وقت کی ضرورت ہے جنوبی وزیرستان کے تما م ناقابل رسائی علاقوں میں رہنے والے قبائلیوں آمد ورفت کی سہولیات پہنچانے کے لئے رابطہ سڑکوں پر کام تیزی سے جار ی ہے ان خیالات کااظہار کمانڈر ہیڈ کوارٹر سیکٹر ساؤتھ ویسٹ بریگیڈئیر آغا خرم رضا نے اپنے دفتر واقع سراروغہ میں سینئر صحافی اوردین محسود کی قیادت میں ملنے والے میڈیا کے نمائندہ وفد سے ملاقات کے دوران کیا اس موقع پر ڈپٹی کمانڈر کرنل اختر بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ محسود قبائل نے ملک وقوم کیلئے جو قربانیاں د ی ہیں وہ اپنی مثال آپ ہیں پاک فوج اور حکومت انکو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے انکا کہناتھاکہ پاک فوج کی بے پناہ قربانیاں اور محسود قبائل کے بھر پور تعاون کی بدولت جنوبی وزیرستان میں ایک مثالی امن قائم ہوچکاہے جس کو قائم اور برقرار رکھنے کے لئے میڈیا نے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا انہوں نے کہا کہ صحافی معاشرے کی آنکھ کان اور زبان ہوتے ہیں اس لئے اپ لوگوں پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں کہ جہاں جہاں مسائل نظر آئیں ان کی نشاندہی کریں تاکہ انکو دور کیا جاسکے انکا کہناتھاکہ بعض شر پسند عناصر علاقہ کے امن کو سبو تاژ کرنے کیلئے ایکا دوکا تخریبی کارروائی کررہے ہیں جن کے مزموم عزائم کو ناکام بنانے کیلئے پاک فوج کے ساتھ مقامی آبادی کا تعاون وقت کی اشد ضرورت ہے تاکہ علاقہ میں دیر پا امن کا تسلسل برقرار رہ سکے انکا کہناتھاکہ اب یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ یہاں کے نوجوانوں کو باعز ت روز گار فراہم کیا جاسکے انہوں نے کہاکہ علاقہ میں زیتون کی پیوندکاری کے منصوبے ہماری ترجیحات میں شامل ہیں کیونکہ اس علاقہ میں زیتون کے درخت لاکھوں کی تعداد میں موجود ہیں جن کو کارآمد بنانے کے لئے پیوند کار ی وقت کی ضرورت ہے تاکہ یہاں کے مکینوں کو گھر کی دہلیز پر باعز ت روز گار کے مواقع مہیا ہوسکیں انکا کہناتھاکہ جنوبی وزیرستان کے تمام ناقابل رسائی علاقوں میں رہنے والے قبائلیوں کو امدورفت کی سہولیات پہنچانے کے لئے دیہاتوں کو رابطہ سڑکوں پر کا م تیزی سے جاری ہے جس سے یہاں کے قبائلیوں کی معیار زندگی بلندہونے سمیت امد ورفت کو سہل بنایا جاسکے صحافیوں نے اپنی جانب سے بھر پور تعاون کا یقین دلایا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر