گلگت بلتستان کے عوام آئند ہ انتخابات میں کارکردگی و کردار کو دیکھ کر فیصلہ کرینگے 

  گلگت بلتستان کے عوام آئند ہ انتخابات میں کارکردگی و کردار کو دیکھ کر فیصلہ ...

  



گلگت (آئی این پی)وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ گلگت  بلتستان کے عوام آئندہ انتخابات میں کارکردگی اور کردار کو دیکھ کر فیصلہ کریں گے۔ مسلم لیگ (ن) کے چار سالہ دور میں  70 سالوں سے زیادہ کے ترقیاتی کام ہوئے ہیں۔ گلگت  بلتستان کی بلاتفریق خدمت کی ہے۔ دعوے سے کہتے ہیں کہ نگر جہاں پر مسلم لیگ (ن) کا ممبر منتخب نہیں ہوا وہاں پر بھی 70 سالوں سے زیادہ ترقیاتی منصوبے دیئے۔ چار سالوں میں جن لوگوں کو حکومت کا تعصب نظر نہیں آیا الیکشن قریب آتے ہی الزامات لگانے والوں کے سیاسی عزائم ہیں۔ ان کا ایجنڈا کسی کو سپورٹ کرنا ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ ممبر پر بیٹھے لوگوں کا احترام کرتے ہیں لیکن نفرتوں کے سیاست کی وجہ سے ماضی میں بے گناہ لوگوں کا خون بہا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے چار سالہ دور میں گلگت  بلتستان کی روشنیاں بحال ہوئی ہیں۔ مسلم لیگ (ن) شکست پسند کرے گی لیکن امن اور شہید سیف الرحمن کے ایجنڈے سے پیچھے نہیں ہٹے گی۔ ہماری جماعت ایک نظریاتی جماعت ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ ہماری اور سابقہ حکومتوں کی کارکردگی عوام کے سامنے ہے۔ ملک میں صرف دو سیاسی جماعتیں ہیں۔ تمام سیاسی جماعتوں کا کچرا جمع کرکے تبدیلی جماعت بنانے والے (ق) لیگ کی طرح نظر ہی نہیں آئے گی۔ وفاق میں ان کی کارکردگی صفر رہی ہے۔ مہنگائی کی سونامی سے عوام کا جینا مشکل ہوا ہے۔ ملک کی ترقی رک گئی ہے۔ سابقہ پیپلز پارٹی کے پانچ سالہ دور میں کرپشن، اقرباء پروری اور چوری کو فروغ دیا گیا۔ سندھ میں 15سالوں سے پیپلز پارٹی کی حکومت ہے لیکن گلگت  بلتستان کے طالب علموں کیلئے میڈیکل اور انجینئرنگ کالجز میں ایک سیٹ کا اضافہ نہیں کیا گیا۔ مسلم لیگ (ن) کے سابق پنجاب حکومت نے 300 فیصد سے زیادہ میڈیکل اور انجینئرنگ کے کالجز میں گلگت  بلتستان کے طالب علموں کیلئے سیٹوں کا اضافہ کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ نیا پاکستان والوں نے ملک میں صرف نفرت کو فروغ دیا ہے۔ سیاسی مخالفین کو گالیاں دینا اور انتقامی کارروائیوں کرنے کے علاوہ کچھ نہیں کیا۔ مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں پنجاب تمام صوبوں کیلئے ایک مثال تھا۔ اب نالائق حکمران ہر روز آئی جی اورچیف سیکریٹری بدل رہے ہیں۔ الیکشن قریب آتے ہی گلگت  بلتستان میں بھی مذہب، قومیت اور علاقائیت کے نام پر نفرت پھیلانے والے آئیں گے۔ گلگت  بلتستان میں مذہب اور نفرت کی سیاست کی وجہ سے 600 سے زیادہ بے گناہ لوگوں کی لاشیں گری۔ ان خیالات کا اظہار وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے سنٹر روڈ دنیورکے افتتاحی تقریب کے موقع پر عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ اسلام امن، محبت اور بھائی چارگی کا مذہب ہے۔ ممبر سے نفرت کا درست دینے کی اسلام کبھی اجازت نہیں دیتا۔ بغیر تحقیق کے باتیں پھیلانے والوں کو قرآن میں منافق کہا گیا ہے۔ گلگت  بلتستان کی تعمیر و ترقی کے ایجنڈے کو مکمل کرنے کیلئے آئندہ انتخابات میں ہر ضلع کیلئے ایجنڈا لے کر آئیں گے۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ آنے والے حالات دیکھ رہے ہیں جس طرح کا ماحول بنایا جارہاہے۔ترقیاتی منصوبوں کو بھی تعصب کے نام دیئے جارہے ہیں وہ درست نہیں ہے۔ گلگت  بلتستان کے عوام نے مسلم لیگ (ن) کو مینڈیٹ دیا ہے۔ ہم اللہ اور عوام کو جوابدہ ہیں۔ اقتدار کو کبھی کسی کیخلاف استعمال نہیں کیا۔ ایک ایجنڈے کے تحت پس پردہ کسی کو سپورٹ کرنے کے مقاصد لئے ترقیاتی منصوبوں پر الزامات لگائے جارہے ہیں۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ اگر کل وفاق میں انتخابات ہوں تو مسلم لیگ (ن) دو تہائی اکثریت حاصل کریگی۔ ملک کی تعمیر و ترقی صرف نواز شریف کے دور میں ہوئی ہے۔ محسن پاکستان محمد نواز شریف وہ لیڈر ہیں جو اپنے نظریے پر کھڑا ہے کسی کے سامنے جھکا نہیں۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ تعمیر و ترقی کیلئے امن کا ہوا لازمی ہے۔ گلگت  بلتستان کے عوام امن وامان اور بھائی چارگی کی فضا کو قائم رکھیں۔ گلگت  بلتستان کی تعمیر و ترقی کیلئے ہمارے قائد اور سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف نے بھرپور وسائل فراہم کئے اور رہنمائی بھی کی۔ جب سے نیا پاکستان والوں کی حکومت بنی ہے ترقیاتی منصوبے ختم کئے جارہے ہیں۔ ہمارے قائد اور سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف نے گلگت  بلتستان اسمبلی کو دیگر صوبوں کے اسمبلیوں کے برابر اختیارات دیئے۔ اگر نااہل نمائندے آئیں گے تو اس کا کوئی حل نہیں ہوگا۔ ڈیڑھ سال وفاق میں ہماری حکومت نہ ہونے کے باوجودکسی ترقیاتی منصوبے کو متاثر نہیں ہونے دیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت  بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ 30 ارب سے زیادہ کی رقم گلگت  بلتستان کی تعمیر و ترقی کیلئے ڈونرز سے لائی گئی۔ سیاسی جماعتوں قوموں کے ترجمان ہوتی ہیں۔ پہلی مرتبہ حلقہ نمبر3 سے مسلم لیگ (ن) کے نمائندے کو کامیابی ملی۔ بحیثیت ٹیم ورک ہم نے گلگت  بلتستان کی خدمت کی۔

مزید : علاقائی