کسٹمز نے جعلی پے آرڈرزکے ذریعے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس ناکام بنادی

کسٹمز نے جعلی پے آرڈرزکے ذریعے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس ناکام بنادی

  



کراچی(این این آئی) پاکستان کسٹمز پورٹ قاسم کلکٹریٹ نے جعلسازی کو بے نقاب کرتے ہوئے 6کروڑ35لاکھ روپے مالیت کے جعلی پے آرڈرز کے ذریعے کپڑے کے متعدد کنسائنمنٹس کی کلیئرنس کی کوشش ناکام بنادی۔اس ضمن میں ذرائع نے بتایاکہ کسٹمز پورٹ قاسم کلکٹریٹ کی جانب سے درآمدی ویلیو میں فرق ہونے کی بنیادپر کپڑوں کے متعددکنسائنمنٹس کی کلیئرنس روک دی گئی تھی جس پر درآمدکنندگان میں شامل میسرز گریوٹی ٹریڈنگ کمپنی، میسرزاقرا ٹیکسٹائل،میسرزجوبلی ٹیکسٹائل، میسر زور ولی امپیکس کی جانب سے عدالت عالیہ میں مذکورہ کپڑوں کے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس کے لیے درخواست دائر کی گئی جس پر عدالت عالیہ نے کسٹمز حکام کو سیکیورٹی پے آرڈرکے عوض کپڑوں کے کنسائنمنٹس کی عارضی اسسمنٹ کی ہدایات جاری کیں تاکہ کنسائمنٹس کی کلیئرنس ممکن ہوسکے۔درآمدکنندگان نے کنسائمنٹس کی کلیئرنس کیلیے 6کروڑ35لاکھ روپے مالیت کے پے آرڈر بطور سیکیورٹی جمع کروائے تاکہ انہیں رکے ہوئے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس مل سکے۔ذرائع نے بتایاکہ کلکٹرپورٹ قاسم ممتازعلی کھوسونے کپڑوں کے کنسائنمنٹس ریلیزکرنے کیلیے جمع کروائے جانے والے پے آرڈرکی جانچ پڑتال کی ہدایات جاری کیں توجانچ پڑتال کے دوران اس بات کا انکشاف ہواکہ درآمدکنندگان نے مبینہ طورپر باہمی ملی بھگت سے کپڑوں کے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس کیلیے جعلی سیکیورٹی پے آرڈرجمع کروائے ہیں۔کسٹمز پورٹ قاسم کلکٹریٹ نے اس امر کابھی انکشاف کیاکہ جمع کرائے جانے والے مذکورہ پے آرڈرکراچی اورلاہورکی برانچوں سے بنوائے گئے تھے لیکن ان پے آرڈرز پر بینک برانچ کے یکساں کوڈ درج ہیں۔ذرائع نے بتایاکہ کسٹمز پورٹ قاسم کلکٹریٹ نے جعلی پے آرڈرکے عوض کپڑوں کے کنسائنمنٹس کی کلیئرنس کے الزام میں درآمدکنندگان میں شامل میسرز گریوٹی ٹریڈنگ کمپنی، میسرزاقرا ٹیکسٹائل، میسرزجوبلی ٹیکسٹائل، میسرزورولی امپیکس اورکلیئرنگ ایجنٹس میسرزکنول انٹرپرائزز اور میسرزویلکم سروسزکیخلاف مقدمہ درج کرلیاہے جبکہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔واضح رہے کسٹمز پورٹ قاسم کلکٹریٹ نے جعلسازی میں ملوث4درآمدکنندگان اور2کسٹمز کلیئرنگ ایجنٹوں کے خلاف مقدمات درج کیے ہیں۔

کسٹمز

مزید : علاقائی