سندھ میں وہ بلدیاتی نظام نافذ کرینگے جسکی منظوری اسمبلی دیگی: سعید غنی

        سندھ میں وہ بلدیاتی نظام نافذ کرینگے جسکی منظوری اسمبلی دیگی: سعید غنی

  



کراچی(آئی این پی)سندھ کے وزیر اطلاعات سعید غنی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے حکم کے بعد حکومت مشکل میں پھنس گئی ہے جسکی وجہ سے اب وہ اتحادیوں سے رابطے کر رہی ہے۔ وفاقی حکومت نے کراچی کیلئے 162 ارب روپے کا اعلان کیا تھا لیکن ابھی تک 62 روپے بھی نہیں دئیے۔ اتوار کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ تحریک انصاف اتحادیوں کے پیچھے بھاگ رہی ہے کیونکہ سپریم کورٹ نے حکومت کو آئینی ترمیم کا کہہ دیا ہے۔سعید غنی نے کہا کہ سندھ میں وہ بلدیاتی نظام نافذ کریں گے جس کی منظوری صوبائی اسمبلی دے گی۔ ہم کوشش کر رہے ہیں کہ لوگوں کیلئے متبادل گھروں کا انتظام کریں اور پھر انسدادتجاوزات کا عمل شروع کریں۔دادو میں 9 سالہ بچی کو ظالمانہ طریقے سے سنگسار کرنے کے واقعے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ معصوم بچی کے سفاکانہ قتل کے واقعے کا نوٹس لے لیا ہے اور قبر کشائی کر کے لاش کا پوسٹ مارٹم کیا جائے گا تاہم قتل کیس میں 2 لوگوں کوحراست میں لے لیا گیا ہے انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت نے ڈسٹرکٹ دادو کے علاقے جوہی کے ایک گاؤں میں مبینہ طور پر یہ پیش آنے والے کارو کاری کے واقع کا نوٹس لیتے ہوئے ڈسٹرکٹ پولیس واقع کی تحقیقا ت کا حکم دے دیا ہے۔پیپلز پارٹی رہنما نے کہا کہ بچی کے والد اور مولوی کو حراست میں لے لیا ہے جبکہ پولیس کوشش کر رہی ہے کہ واقعہ کی کوئی سی سی ٹی وی فوٹیج مل جائے۔کراچی سے اغوا ہونے والی لڑکی کے واقعے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی کا کہنا تھا کہ پولیس سی سی ٹی وی فوٹیج کے ذریعے گاڑی کو پہچاننے کی کوشش کر رہی ہے اور جس شخص کو گرفتار کیا گیا ہے اس سے بھی پولیس تفتیش ہو رہی ہے۔

سعید غنی

مزید : صفحہ آخر