خواتین پر بڑھتے تشدد کے واقعات قابل مذمت اور جہالت ہے،  فائزہ نقوی

 خواتین پر بڑھتے تشدد کے واقعات قابل مذمت اور جہالت ہے،  فائزہ نقوی

  



لاہور(پ ر) جمعیت علمائے پاکستان شعبہ خواتین کی مرکزی صدر سیدہ فائزہ نقوی نے خواتین پر تشددکے بڑھتے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین پر تشدد ذہنی مرض اور معاشرتی المیہ ہے۔ اس ناسور کا خاتمہ کرکے ہم اچھے خاندان اور مہذب پاکستان کی بنیاد رکھ سکتے ہیں۔

   خواتین ملک کی نصف سے زائد آبادی اور خاندان کو چلانے والی ہیں مگر افسوس کچھ مرد اپنی انا کی تسکین کے لیے خواتین پر تشدد کرکے کم ظرفی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ 

 جے یو پی شعبہ خواتین کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین پر بڑھتے ہوئے تشدد کے واقعات قابل  مذمت اور جہالت ہے۔ انہوں نے خواتین پر تشدد کی روک تھام کے لئے مروجہ قوانین پر عملدرآمد کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہا کہ خواتین کو اپنے حقوق سے آگاہی اور مردوں کو تحمل و برداشت سمجھانے کی ضرورت ہے۔ مرد کاعورت پر تشدد مردانگی نہیں،بلکہ ذہنی بیماری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ خواتین مائیں،بہنیں، بیٹیاں اور بیوی یا کولیگ ہو سب کا احترام اسلامی تعلیمات کا حصہ ہے۔ خاتم الانبیاء حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنی بیویوں کے ساتھ گھریلو کاموں میں ہاتھ بٹایا کرتے تھے اور اپنی صاحبزادی بی بی فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا کے احترام میں کھڑے ہو جایا کرتے تھے۔ ہمیں تعلیمات نبوی کی پیروی کرتے ہوئے گھر کا ماحول پرسکون بنانے کی ضرورت ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1