طلبہ یکجہتی مارچ کے منتظمین پر ریاستی اداروں کیخلاف تقاریر کا مقدمہ درج

طلبہ یکجہتی مارچ کے منتظمین پر ریاستی اداروں کیخلاف تقاریر کا مقدمہ درج

  



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)لاہور میں مال روڈ پر طلبہ یکجہتی مارچ کے منتظمین کیخلاف پولیس نے مقدمہ درج کرلیا۔سول لائنز پولیس کی جانب سے درج کیے جانیوالے مقدمے میں عمارعلی جان، فاروق طارق، عالمگیر وزیر، مشعال خان کے والد اقبال لالہ، محمد شبیر اور کامل خان کو نامزد کیا گیا ہے۔مقدمے میں 250 سے 300 نامعلوم افراد کو بھی شامل کیا گیا ہے جبکہ ایف آئی آر میں کہا گیا ہے ریلی کے شرکاء نے حکومتی اور ریاستی اداروں کیخلا ف تقاریرکیں۔پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے طلبہ مارچ کے منتظمین کیخلاف ایف آئی آر کے اندراج کی مذمت کی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے پرامن مارچ کے طلبہ کیخلاف مقدمے کا اندراج ریاستی جبر ہے۔واضح رہے طلبہ یونین کی بحالی کے لیے ملک کے مختلف شہروں میں طلبہ نے 29 نومبر کو احتجاج کیا تھا، دیگر شہروں کی طرح لاہور میں بھی ناصر باغ مال روڈ پر مختلف طلبہ تنظیموں کے زیراہتمام ریلی نکالی گئی تھی جس میں طالبات نے بھی شرکت کی تھی۔

مقدمات درج

مزید : صفحہ اول