قومی مفاد کیلئے پارلیمنٹ قانون سازی کرے،محمدحسین محنتی

قومی مفاد کیلئے پارلیمنٹ قانون سازی کرے،محمدحسین محنتی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیر وسابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ جمہوری اداروں کے باوجود صدارتی آرڈیننس میرٹ کا قتل، اداروں کی بے توقیری اور بدترین آمریت ہے، سندھ کے حالات میں تبدیلی، عوامی شعور بڑھ رہا ہے، زبوں حال معاشی صورتحال نے عام آدمی کی زندگی اجیرن بناکر رکھ دی ہے، کارکن بلدیاتی انتخابات کی تیاری اور سندھ کے عوام کو متبادل اور دیانتدار قیادت پیش کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباء آڈیٹوریم میں ضلعی امراء کے اجلاس سے صدارتی خطاب کے دوران کیا، جس میں کراچی سمیت سندھ بھر کے ضلعی ذمہ داران موجود تھے، اجلاس میں صوبائی سیکریٹری اطلاعات مجاہد چنا کی ہمشیرہ سمیت دیگر مرحومین کی مغفرت کی دعا بھی کی گئی،ضلعی ذمہ داران نے سہ ماہی کارکردگی رپورٹ پیش کی، صوبائی جنرل سیکریٹری کاشف سعید شیخ،نائب امراء پروفیسر نظام الدین میمن، ممتاز حسین سہتو، حافظ نصراللہ عزیز،عبدالغفار عمر، نائب قیمین عبدالوحید قریشی، عبدالحفیظ بجارانی، مولاناعبدالقدوس احمدانی اورافضال احمد آرئیں بھی موجود تھے۔ محمد حسین محنتی نے مزید کہ اکہ اللہ تعالیٰ نے انسان کو بے شمار نعمتوں سے نوازا ہے جس کا تقاضہ ہے کہ ہمیں اپنی جان، مال اور وقت سمیت تمام صلاحیتیں اللہ کی راہ میں یعنی اقامت دین کیلئے خرچ کردینی چاہیں، ہم چوبیس گھنٹوں کیلئے اللہ کے نوکر ہیں اور ان تمام چیزوں کا اللہ کے ہاں جواب دینا ہوگا، انہوں نے کہا کہ حکومتی تمام دعووں کے باوجود مہنگائی کا طوفان اورمعاشی ابتر صورتحال نے عام آدمی کو سخت پریشان کرکے رکھ دیا ہے، جبکہ حکمران راوی دریا میں پُرآسائش کشتیوں میں بیٹھ کر مزے لینے میں مصروف ہیں،وزیراعظم کی معاشی،قانونی اور سیاسی ٹیم مکمل طور پر شکست فاش کا شکار ہوچکی ہے لیکن حکمرانوں کی ضد اور ہٹ دھرمی کی وجہ سے پاکستان کے تمام ادارے متنازعہ بن چکے، احتساب کو انتقام کی بھینٹ چڑھادیا گیا اور کروڑوں نوکریاں دینے، پچاس لاکھ گھر بنانے کی دعویدار حکومت آج معاشی، سیاسی اور آئینی بحران کی دلدل میں پھنس چکی ہے،سندھ میں ٹڈی دل کے حملے کی وجہ سے کسان جو پہلے ہی بدحالی اور غربت کا شکار ہیں مزید ابتری کا شکار ہوچکے ہیں،صوبائی اور وفاقی حکومت کی جانب سے ٹڈی دل کے خاتمے کیلئے کوئی بھی مؤثر اقدامات نہیں کئے جارہے ہیں جس کی وجہ سے بڑے پیمانے پر غذائی بحران پیدا ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔کاشتکاروں کے نقصان کے ازالے کے لیے ان کے ساتھ مالی تعاون کیا جائے۔ ملک میں حقیقی تبدیلی اور تمام مسائل کا حل قرآن وسنت کا نفاذ ہے، حکومت پارلیمنٹ کو ربڑ اسٹیمپ بنانے کی بجائے قومی مفاد اور عوامی مسائل کے حل کیلئے قانون سازی کرکے اپنی ذمہ داری پوری کرے،جماعت اسلامی ملک میں قرآن وسنت کے نفاذ اور اصلاح معاشرہ کیلئے اپنی کوششیں جاری رکھے گی۔

مزید : صفحہ اول