سپریم کورٹ میں فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس کی سماعت، اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا کونوٹسزجاری

سپریم کورٹ میں فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس کی سماعت، اٹارنی جنرل ...
سپریم کورٹ میں فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس کی سماعت، اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا کونوٹسزجاری

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس میں اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا کونوٹسزجاری کردیئے ،عدالت نے قانونی سوالات پرمعاونت کیلئے اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرلز طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس کی سماعت ہوئی،عدالت نے کہا کہ 25 ویں آئینی ترمیم کے بعد ایف سی آر اورفاٹا ٹربیونل ختم ہو چکے ہیںایف سی آر اور ٹریبونل کے خاتمے کے بعد زیر التوامقدمات کون سے عدالتی فورم پر جائیں گے؟عدالت نے استفسار کیا کہ فاٹا کے متاثرین کو عدالتی فورم فراہم کرنے کیلئے کیا کوئی قانون سازی کی گئی؟ایڈووکیٹ بابراعوان نے کہا کہ قاسم قبیلے کی رائلٹی سے متعلق ہائیکورٹ کو الگ سے فیصلہ دینا چاہئے تھا ۔

عدالت نے فاٹا قاسم خیل قبیلہ رائلٹی کیس میں اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا کونوٹسزجاری کردیئے،عدالت نے قانونی سوالات پرمعاونت کیلئے اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرلز طلب کرلیا،عدالت نے سینئر ایڈووکیٹ بابراعوان کو بھی معاملے پر معاونت کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد