جمعہ کی نماز پڑھنے کی بجائے سیر کرنے جانے والے 6 لوگوں کو جیل میں ڈال دیا گیا

جمعہ کی نماز پڑھنے کی بجائے سیر کرنے جانے والے 6 لوگوں کو جیل میں ڈال دیا گیا
جمعہ کی نماز پڑھنے کی بجائے سیر کرنے جانے والے 6 لوگوں کو جیل میں ڈال دیا گیا

  



کوالالمپور(مانیٹرنگ ڈیسک) ملائیشیاءمیں جمعہ کی نماز پڑھنے کی بجائے سیر کے لیے چلے جانے والے 6لوگوں کو قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا گیا۔ مالے میل کے مطابق ان 6مردوں میں 35سالہ خیرالازل عبدالرشید، 25سالہ عبدالمالک محمد، 22سالہ محمد حفیظی عبدالرزاق، 19سالہ محمد علیف فکری ا ے مزانی اور دیگر دو 17سالہ لڑکے شامل ہیں۔ ان لوگوں کو ہولو ترنگانو کی لوئر شریعہ کورٹ کی طرف سے سزا سنائی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ترنگانومیں نافذ شرعی قوانین کے مطابق جان بوجھ کر نماز چھوڑنے والوں کو 2سال تک قید اور 3ہزار رنگٹ (ملائیشین کرنسی)تک جرمانہ ہو سکتا ہے۔ تاہم روایتی طور پر اس قانون کی خلاف ورزی پر شاذ و نادر ہی لوگوں کو سزا دی جاتی ہے۔ ان تمام 6افراد کو ایک ایک مہینہ قید اور فی کس 2400رنگٹ جرمانے کی سزا سنائی گئی۔ اس مردوں کو خواتین پولیس آفیسرز نے گرفتار کیا تھا۔ وہ جمعہ کی نماز کے وقت اس سیاحتی مقام پر چیک کر رہی تھیں کہ کوئی مرد جمعہ پڑھنے کی بجائے وہاں موجود نہ ہو۔ جب آفیسرز وہاں پہنچیں تو یہ لوگ وہاں پکنک منا رہے تھے۔

مزید : بین الاقوامی