’مجھے میرے بوائے فرینڈ سے ایچ آئی وی ہوگیا تو میں نے سمجھا زندگی ختم ہوگئی لیکن دراصل وہ تو نئی زندگی کا آغاز تھا‘ وہ لڑکی جس کی زندگی انتہائی خطرناک بیماری نے بدل دی

’مجھے میرے بوائے فرینڈ سے ایچ آئی وی ہوگیا تو میں نے سمجھا زندگی ختم ہوگئی ...
’مجھے میرے بوائے فرینڈ سے ایچ آئی وی ہوگیا تو میں نے سمجھا زندگی ختم ہوگئی لیکن دراصل وہ تو نئی زندگی کا آغاز تھا‘ وہ لڑکی جس کی زندگی انتہائی خطرناک بیماری نے بدل دی

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک خاتون کے دروازے پر دستک ہوئی۔ اس نے آ کر دروازہ کھولا تو سامنے اس کا سابق بوائے فرینڈ کھڑا تھا، جس نے خاتون کو ایسی خبر سنائی کہ اس کے پیروں تلے زمین نکل گئی۔ دی مرر کے مطابق اس 60سالہ خاتون کا نام سو موریسن تھا۔ موریسن کا کہنا ہے کہ ”یہ 13سال پہلے کا واقعہ ہے۔ جب میں نے دروازہ کھولا تو دروازے پر اپنے سابق بوائے فرینڈ کو دیکھ کر حیران رہ گئی تاہم اس نے جو کچھ مجھے بتایا وہ سن کر کچھ عرصے کے لیے میں خود کو موت کے منہ میں جاتے سمجھنے لگی۔ اس نے بتایا کہ اسے ایڈز لاحق ہے۔ اسے بھی اس کا اب جا کر پتا چلا تھا۔“

موریسن نے مزید بتایا کہ ”اس کے بتانے کے بعد میں نے اپنا ٹیسٹ کروایا تو مجھے بھی ایچ آئی وی لاحق ہو چکا تھا۔ مجھے ایسے لگا جیسے اس شخص کے ساتھ تعلق میرے لیے سزائے موت بن گیا ہو۔ کئی سال تک میں مایوسی کے اندھیرے میں زندگی جیتی رہی۔ میں سمجھتی رہی کہ اب جلد ہی میری موت واقع ہو جائے گی لیکن میں غلط تھی۔ میں بھی ایچ آئی وی کے باقی مریضوں کی طرح منفی سوچ رکھتی تھی۔ جسے میں سزائے موت سمجھ رہی تھی وہ واقعہ دراصل میری زندگی کی ایک نئی لیز ثابت ہوا اور مجھے پتا چلا کہ علاج کروایا جائے تو ایچ آئی وی کے ہوتے ہوئے بھی نارمل زندگی گزاری جا سکتی ہے۔ اس مرض کے متعلق معاشرے میں جس طرح کا تاثر پایا جاتا ہے وہ سراسر غلط ہے۔“ رپورٹ کے مطابق موریسن اب ایچ آئی وی اور ایڈز کے متعلق برطانیہ آگہی دینے کا کام کرتی ہے۔ وہ لوگوں کو بتاتی ہے کہ ایچ آئی وی لاحق ہو جانے سے ان کی زندگی ختم نہیں ہو گئی بلکہ وہ اب بھی نارمل زندگی گزار سکتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس