”لاہور شہر کو ایک ہفتے کیلئے مکمل بند کرنا پڑے گا اگر ۔۔“لاہور ہائیکورٹ نے عندیہ دیدیا 

”لاہور شہر کو ایک ہفتے کیلئے مکمل بند کرنا پڑے گا اگر ۔۔“لاہور ہائیکورٹ نے ...
”لاہور شہر کو ایک ہفتے کیلئے مکمل بند کرنا پڑے گا اگر ۔۔“لاہور ہائیکورٹ نے عندیہ دیدیا 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )لاہور ہائیکورٹ نے عندیہ دیا ہے کہ اگر کچھ دن میں ائیر کوالٹی بہتر نہ ہوئی تو لاہور شہر کو ایک ہفتے کے لیے مکمل بند کیا جا سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں بڑھتی ہوئی آلودگی اور اسموگ کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواستوں پر سماعت ہوئی۔جسٹس شاہد کریم نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ تیاری کر لیں، ہو سکتا ہے کہ ائیر کوالٹی کی بہتری کے لیے لاک ڈاو¿ن کرنا پڑے، تمام متعلقہ محکمے اجلاس کریں اور ماحولیاتی ایمرجنسی لگانے پر غور کریں۔

جسٹس شاہد کریم نے پی ڈی ایم اے سے کہا کہ اس معاملے میں ایکسپرٹ کی خدمات حاصل کرنے کی ضرورت ہے جو رپورٹ مرتب کر کے حل تجویز کریں۔پی ڈی ایم اے کے ایڈیشنل ڈائریکٹر امیر اللہ ملک نے عدالت کو بتایا کہ پیر کی چھٹی کی وجہ سے ائیر کوالٹی انڈیکس 400 رہا ورنہ یہ 600 ہو جاتا، اتوار تک ائیر کوالٹی انڈیکس 200 سے نیچے آ جائے گا۔ میئر لاہور مبشر جاوید نے عدالت کو بتایا کہ سٹیل انڈسٹری میں ٹائر جلائے جاتے ہیں، جس پر جسٹس شاہد کریم نے کہا کہ جہاں ٹائر جلتے ہیں اس کی فوری شکایت واٹر کمیشن کو کریں۔

پی ڈی ایم اے نے بتایا کہ ٹریفک اور ماحولیاتی آلودگی کو رپورٹ کرنے کے لیے ایپلیکیشن بنا دی ہے، جسٹس شاہد کریم نے کہا کہ اس ایپلیکشن کی تشہیر کریں۔عدالت نے درخواستوں پر سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کرتے ہوئے کہا کہ بڑھتی ہوئی سموگ کے باعث لاہور میں ایک ہفتے کے لیے کلائمیٹ ایمرجنسی لگانی پڑ سکتی ہے۔سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے امیر اللہ ملک کا کہنا تھا کہ سموگ میں کمی کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔

مزید :

قومی -