"پاکستانیوں نے بیرون ممالک مہنگائی کا فائدہ اٹھانے کیلئے  زیادہ چیزیں درآمد کیں جس سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھا" 

"پاکستانیوں نے بیرون ممالک مہنگائی کا فائدہ اٹھانے کیلئے  زیادہ چیزیں درآمد ...
سورس: File

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر خزانہ حفیظ پاشا کا کہنا ہے کہ  پاکستانی سرمایہ کاروں نے عالمی مارکیٹ میں مہنگائی سے فائدہ اٹھانے کیلئے درآمدات بڑھا دیں جس کی وجہ سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھا ۔ آنے والے دنوں میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ کر 17 سے 18 ارب ڈالر تک جاسکتا ہے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے حفیظ پاشا نے بتایا کہ نومبر کے مہینے میں آٹھ ارب ڈالر کی درآمدات کی گئیں جو تاریخ ساز ہے ۔ گزشتہ ماہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ پانچ ارب ڈالر سے زائد رہا۔

انہوں نے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں اضافے کی ایک وجہ  تو پاکستانی روپے کی قیمت میں کمی ہے۔ دوسرا یہ بھی ہے کہ بیرون ممالک میں چیزوں کی قیمتیں بڑھی ہیں جس کے باعث جب کوئی پراڈکٹ پاکستان پہنچتی ہے تو اس کی لینڈنگ کاسٹ بڑھ چکی ہوتی ہے۔

حفیظ پاشا نے امکان ظاہر کیا کہ دنیا میں ہونے والی مہنگائی کا ہمارے درآمد کنندگان فائدہ اٹھا رہے ہیں اور زیادہ سے زیادہ مال منگوا رہے ہیں تاکہ "اللہ کے فضل سے" مہنگائی کی صورت میں مزید نفع حاصل کرسکیں۔

انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 17 سے 18 ارب ڈالر تک جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ آپ نے 11 سے 12 ارب ڈالر کے قرضے بھی واپس کرنے ہیں ، آپ 30 ارب ڈالر کہاں سے لائیں گے؟

مزید :

اہم خبریں -قومی -بزنس -