الیکشن کمیشن نے ای وی ایم اور اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے تین ٹیکنیکل کمیٹیاں بنا دیں:سینیٹر شبلی فراز

الیکشن کمیشن نے ای وی ایم اور اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے تین ٹیکنیکل ...
الیکشن کمیشن نے ای وی ایم اور اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے تین ٹیکنیکل کمیٹیاں بنا دیں:سینیٹر شبلی فراز
سورس: File Photo

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے کہا ہے کہ گزشتہ تمام الیکشن متنازعہ ہونے کے باعث ملکی سیاسی و جمہوری نظام متاثرہوا ، الیکٹرانک ووٹنگ مشین(ای وی ایم) کیلئے 2010ء سے کوششیں جاری تھیں،آئندہ انتخابات میں 23 ماہ باقی رہ گئے ہیں، تیاری کیلئے مناسب وقت دستیاب ہے، الیکشن کمیشن نے ای وی ایم اور اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے تین ٹیکنیکل کمیٹیاں بنا دی ہیں۔

ایوان صدرمیں منعقدہ تقریب  سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ ہم نے وعدہ کیا تھا کہ ہم ملک میں انتخابات کو شفاف اور منصفانہ بنانے کے لئے ٹیکنالوجی کا استعمال کریں گے،صدر مملکت ، وزیراعظم اور کابینہ کے اراکین نے اس میں دلچسپی لی، نئی قانون سازی کے بعد اب ہمارے پاس مناسب وقت ہے تاکہ اس کو عملی جامہ پہنا سکیں۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان میں ہر الیکشن کے بعد دھاندلی کا شور مچتا ہے، جس نے ملک کو عدم استحکام سے دوچار کیا ہے،2010ءمیں الیکشن کمیشن آف پاکستان نے کہا تھا کہ ای وی ایم کے ذریعے انتخابات کرانے میں پانچ سے 10سال لگیں گے،اس لئے اب ہمیں ٹیکنالوجی کا استعمال کرنا چاہئے،وزیراعظم نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین بنانے کے لئے 90دن کا وقت دیا تھا، جسے وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے تیار کیا ہے۔

سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان اس بات کا فیصلہ کرے کہ اس نے انتخابات میں کونسی مشین استعمال کرنی ہے؟الیکشن کمیشن نے تین کمیٹیاں بھی بنا دی ہیں جس میں ایک تکینکی کمیٹی بھی شامل ہے، حکومت نے وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں دلیرانہ فیصلے کئے ہیں، جس سے ہم ملک میں سیاسی استحکام لاسکتے ہیں۔

 تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ آج پاکستان کی تاریخ کا بڑا دن ہے ، پاکستان کے ماضی کے حکمران نعرے لگا کر اور وعدے کرتے ہوئے رخصت ہو گئے،تین سال کی محنت اور پارلیمنٹ میں ایک سال کی کوشش کے بعد قانون سازی کی گئی ہے،وزیراعظم عمران خان، وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز اور دیگر حکومتی عہدیداروں نے ناممکن کو ممکن بنا دیا ہے، نئی قانون سازی کے نتیجے میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو فیصلہ سازی میں پہلی بار شامل کر رہے ہیں جس پر صدر ، وزیراعظم ، پارلیمنٹ ، پاکستان کے عوام اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین کی مخالفت وہ لوگ کر رہے ہیں جنہوں نے اپنے حلقوں میں ہزاروں جعلی ووٹ بنائے ہیں اور وہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے خوفزادہ ہیں، 2023ءکے انتخابات الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ذریعے ہوں گے اور ٹیکنالوجی کے ذریعے دھاندلی کو روک سکتے ہیں۔

مزید :

قومی -