غلام محمود ڈوگربطور سی سی پی اولاہور بحال ، سپریم کورٹ نے حکم جاری کر دیا

غلام محمود ڈوگربطور سی سی پی اولاہور بحال ، سپریم کورٹ نے حکم جاری کر دیا
غلام محمود ڈوگربطور سی سی پی اولاہور بحال ، سپریم کورٹ نے حکم جاری کر دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )  وزیر اعلیٰ پنجاب  چودھری پرویز الٰہی کے حمایت یافتہ اور وفاقی حکومت کی جانب سے معطل کیے جانے والے سی سی پی او لاہور غلام محمود  ڈوگر کو سپریم کورٹ نے بحال کردیا ہے ۔

نجی ٹی وی چینل "جیو نیوز "کے مطابق سپریم  کورٹ کے جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں 3رکنی بینچ نے  سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کی بحالی کی درخواست پر سماعت کی، وکیل عابد زبیری نے کہا کہ غلام محمود ڈوگر کو فیڈرل سروس ٹربیونل نے بحال کیا تھا اور سروس ٹربیونل کے 2رکنی بینچ نے بحالی کا فیصلہ معطل کردیا، ٹربیونل کے دو رکنی بینچ کا فیصلہ دوسرا دو رکنی بینچ معطل نہیں کر سکتا جب کہ حکومت کی نظرثانی درخواست بھی ٹربیونل میں زیرالتوا تھی۔

وکیل کے دلائل پر جسٹس اعجاز نے سوال کیا کہ ٹربیونل کا ایک بینچ دوسرے بینچ کا فیصلہ کیسے معطل کر سکتا ہے؟ خصوصی بینچ نےایک جانب کہا درخواست قبل ازوقت ہے اور ساتھ ہی حکم معطل کردیا،جسٹس مظاہر نقوی نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ نےکیسے کہہ دیا کہ آئینی درخواست قابل سماعت نہیں؟ بعد ازاں عدالت نے سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو بحال کرتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی ،عدالت نے سروس ٹربیونل کے خصوصی بینچ کے فیصلے کے خلاف اپیل پر وفاقی حکومت کو بھی نوٹس جاری کردیا ہے ۔

واضح رہےکہ وفاقی حکومت نے غلام محمود ڈوگر کو اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کی ہدایت کی تھی جس پر انہوں نے وفاق کی ہدایت پر عمل نہیں کیا تھا اور کام جاری رکھا تھا جس پر انہیں معطل کیا گیا تھا،چیئرمین پی ٹی آئی پر قاتلانہ حملے کے بعد تحریک انصاف کے کارکنوں نے لاہور میں احتجاج کے دوران گورنر ہاؤس لاہور پر بھی توڑ پھوڑ کی تھی، غلام محمد ڈوگر پر گورنر ہاؤس کو تحفظ دینے میں غفلت برتنے اور پولیس کو سیاست زدہ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -