نجی پاور کمپنیوں کے حکومتی قرضے 302 ارب سے تجاوز کرگئے

نجی پاور کمپنیوں کے حکومتی قرضے 302 ارب سے تجاوز کرگئے

اسلام آباد (آئی این پی)نجی پاور کمپنیز کے حکومت پر قرضے تین سو دو ارب اکتیس کروڑ چالیس لاکھ روپے تک پہنچ گئے۔ ذرائع کے مطابق انیس سو چورانوے کی کمپنیز کے واجبات ایک سو چھپن ارب چھبیس کروڑ ستر لاکھ ہیں جبکہ سال دو ہزار دو کی کمپنیز کا قرض پنتیس ارب بائس کروڑ پچاس لاکھ تک پہنچ گیا۔تفصیلات کے مطابق جینکوز کا قرضہ ایک سو دس ارب بیاسی کروڑ سے زائد ہے جبکہ بجلی پیداوار کی تفصیلات کے مطابق آئی آئی پی پیز کی مجموعی پیداوار چار ہزار چار سو دس میگاواٹ ،حبکو بارہ سو بانوے، اچ پاورپانچ سو چھاسی اور پاک جین کی مجموعی پیداوار تین سو پینسٹھ میگاواٹ ہے۔لال پیر تین سو باسٹھ، ٹپال ایک سو چھبیس اور سدرن الیکٹرک ایک سو پندرہ میگاواٹ بجلی پیدا کررہی ہے، اسی طرح صبا پاور ایک سو چودہ، روش چار سو بارہ، لبرٹی دو سو پنتیس اور کوہ نور کی پیداوار ایک سو اکتیس میگاواٹ ہے، جاپان پاور ایک سو بیس، حبیب اللہ ایک سو چالیس اور گل احمد کی یومیہ پیداوار ایک سو چھتیس میگاواٹ ہے۔ ذرائع کے مطابق اس وقت فوجی کبیروالا ایک سو ستاون اور آلٹرن انرجی انتیس میگاواٹ بجلی پیدا کررہی ہے۔

مزید : کامرس