انگور کے پودے لگانے کا 15فروری تک مکمل کیا جائے ٗمحکمہ زراعت پنجاب

انگور کے پودے لگانے کا 15فروری تک مکمل کیا جائے ٗمحکمہ زراعت پنجاب

 راولپنڈی (این این آئی)محکمہ زراعت راولپنڈی کے ترجمان نے کہا ہے کہ انگور کی کاشت کیلئے ایسے علاقے زیادہ موزوں ہیں جہاں موسم گرما کے دوران بارشیں کم ہوں اور موسم نسبتاً گرم اور خشک ہوجبکہ دن طویل ہوں تاکہ انگور کی بیلوں کو وافر مقدار میں دھوپ میسر ہو۔ درجہ حرارت انگور کے معیار اور مٹھاس پر براہ راست اثر انداز ہوتا ہے دن کے وقت زیادہ درجہ حرارت انگور کے پھل میں مٹھاس اور رس پیدا کرنے کیلئے ضروری ہے یہی وجہ ہے کہ گرم مرطوب علاقوں کے انگور غذائی اہمیت کے لحاظ سے بہتر سمجھے جاتے ہیں۔ موسم سرما میں درجہ حرارت کم ہونے کی وجہ سے انگور کی بیلوں کے پتے گر جاتے ہیں اور بیلیں خوابیدگی کی حالت میں چلی جاتی ہیں۔ بیلیں خوابیدگی کی حالت میں کم سے کم درجہ حرارت حتیٰ کہ کورے کو بھی برداشت کر سکتی ہیں۔ پوٹھوارکا علاقہ بھی انگور کی کاشت کے لیے موزوں ہے۔ موسم گرما (مون سون) میں ہونے والی بارشیں انگور کے پھل کو نقصان پہنچتی ہیں اس لئے انگور کی ایسی اقسام کاشت کی جائیں جو مون سون بارشوں کے آغاز سے پہلے برداشت کیلئے تیار ہوجائیں۔ انگور کی کاشت تقریباً ہر قسم کی زمین میں کی جاسکتی ہے۔ترجمان نے کہا کہ انگور کے پودے لگانے کا عمل 15فروری تک مکمل کیا جائے کیونکہ اس وقت وہ خوابیدگی کے عمل میں ہوتے ہیں اور آسانی سے جڑیں پکڑ لیتے ہیں جبکہ ایسے پودے جن کی نشوونما شروع ہو گئی ہو اور پتے نکل رہے ہوں ان کے مرنے کے زیادہ امکانات ہوتے ہیں۔

مزید : کامرس