کشمیر دشمن ایجنڈے کو کسی صورت میں کامیاب نہیں ہونے دینگے:یاسین ملک

کشمیر دشمن ایجنڈے کو کسی صورت میں کامیاب نہیں ہونے دینگے:یاسین ملک

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چےئرمین محمد یاسین ملک نے بھارت نواز جماعت پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے رہنمامظفر حسین بیگ کے غیر کشمیریوں کو ریاست میں شہریت دینے سے متعلق بیان کو ہندو انتہا پسند جماعت راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ کی خوشنودی اور بھارتی حکومت میں وزارت حاصل کرنے کی کوشش قرار دیاہے۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق محمد یاسین ملک نے سرینگر کے علاقے سرائے بالا میں ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جو لوگ آج انسانیت کی باتیں کررہے ہیں وہ1947ء میں جموں میں مسلمانوں کے قتل عام کے بعد بیدخل کئے گئے کشمیریوں کے حقوق پر چپ کیوں ہیں۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی رہنما کا یہ بیان کشمیر دشمنی کا کھلا اعلان ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری اپنے مستقبل کے تعین کے لیے ایک مقدس تحریک چلارہے ہیں اور وہ اس جدوجہد میں بے شمار قربانیاں دے رہے ہیں۔ فرنٹ سربراہ نے مظفر بیگ کی جانب سے امریکہ کی مثال دینے کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ جسے تارکین وطن نے ہی آباد کیا ہے کا ماحولیات کے لحاظ سے غیر محفوظ جموں وکشمیر سے کیسے موازنہ کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقتدار کی ہوس نے مظفر بیگ کی عقل و دانش کو ماؤف کردیا ہے اور وہ اپنے آر ایس ایس کے آقاؤں کو خوش کرنے کیلئے بے تکی باتیں کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مظفر بیگ نے اپنے پچھلے دور اقتدار میں بھی کشمیر کے اسٹیٹ سبجیکٹ قانون کو کمزور کرنے کی کوشش کی۔ محمد یاسین ملک نے مظفر بیگ کی طرف سے قرآن و سنت کا حوالہ دینے پر حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قانون کی رو سے تو پھر بھارت کو کب کا جموں وکشمیر کو جبری تسلط سے آزاد کر دینا چاہئے تھا اور1947ء میں مسلمانوں کے قتل عام کے بعد جن لاکھوں لوگوں کو جبراً جموں بدر کر دیا گیا تھا ان کی زمینیں اور جائیدایں نیز انکی واپسی کیلئے بھی راہیں کھل جانی چاہئے تھیں۔

مزید :

عالمی منظر -