پنجاب ایمرجنسی سروس نے جنوری میں 50833 متاثرین کو امداد فراہم کی

پنجاب ایمرجنسی سروس نے جنوری میں 50833 متاثرین کو امداد فراہم کی

 لاہور(کرائم سیل) ڈی جی ریسکیو پنجاب ڈاکٹر رضوان نصیرنے گزشتہ روز پنجاب کے تمام اضلاع میں ریسکیو 1122کی ماہانہ کارکردگی کا جائزہ لیاجسکا مقصد سروس کی کارکردگی اوربکسی تفریق کے بغیر تمام شہریوں کویکساں معیارکی ایمرجنسی سروسز ڈلیوری کویقینی بنانا ہے۔ایمرجنسی سروس کے اعدادو شمار کے مطابق ریسکیو1122نے جنوری میں پنجاب بھر میں اپنے سات منٹ ریسپانس ٹائم کو برقراررکھتے ہوئے 49738 ریسکیوآپریشن کے دوران 50833 ایمرجنسی متاثرین کو ریسکیوکیا،اس دوران ریسکیو 1122کے پراونشل مانیٹرنگ سیل کو موصول ہونے والی ایمرجنسی کالز کا موازنہ کیا جائے تو ان میں16125کال ٹریفک حادثات،26227 میڈیکل ایمرجنسی،919آگ لگنے کے واقعات ،1430جرائم کی کال21,ڈوبنے کے واقعات, 47عمارتیں منہدم ہونے کے واقعات اور20 دھماکوں کے واقعات اور 4899دیگر ریسکیو آپریشن شامل ہیں جن پر ریسکیو1122نے ریسپانڈ کیا۔گذشتہ روز ریسکیو1122ہیڈکوارٹرز میں ایک میٹنگ کی صدارت کے دوران ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر رضوان نصیرکوپراونشل مانیٹرنگ سیل نے بتایاکہ گزشتہ ماہ کی نسبت جنوری میں آتشزدگی اورٹریفک حادثات میں قدرے اضافہ دیکھاگیاہے،ڈی جی ریسکیوپنجاب نے کہاکہ 30لاکھ ایمرجنسی متاثرین کو ریسکیو کرکے ریسکیو1122نے زندگیاں بچانے کے تصورکوحقیقت کاروپ دیاہے، اب ہماراموٹوذہنوں کی تبدیلی ہے جس کے تحت معاشرتی سطح پرشہریوں کی سوچ بدلنے کے بارے آگاہی دی جائے گی تاکہ ایمرجنسی ہونے سے پہلے اس کی روک تھام کی جاسکے،انہوں نے کہاکہ ریسکیو1122نے CERTsکے قیام کے ساتھ ہی پنجاب کے تمام تحصیلوں میں کمیونٹی بیسڈڈزاسٹر رسک ریسپانس(CBDRM) پروگرام کونافذ کردیاہے جس کے ذریعے ہم محفوظ ، صحت مند اور توانا معاشروں کی تعمیر کرسکیں گے ۔انہوں نے تمام ضلعی ایمرجنسی افسران کوہدایت کی کہ وہ اس پروگرام کو نافذ کریں اور عوام کی جان و مال کی حفاظت کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے تمام ضلعی ایمرجنسی افسران کومزید ہدایت کی کہ وہ کمیونٹی واچ کے ذریعے اپنے اپنے اضلا ع میں ہونیوالی مشکوک سرگرمیوں پرنظررکھیں کیونکہ یہ ملک ہماراہے اور ہم نے ہی اسے ریسکیو کرناہے۔انہوں نے ریسکیو افسران پرزوردیاکہ وہ مقامی سطح پرجان و مال کونقصان پہنچانے والے ہرڈرز کی نشاندہی، صفائی ستھرائی کانظام، عوامی جلوس کی جگہوں اور مواقع بشمول عید،محرم الحرام اور دیگرمعاشرتی اِکَٹھ کے موقع پرمشکوک سرگرمیوں پرنظررکھیں۔

مزید : علاقائی