سمندر میں گرکر تباہ ہونیوالے ائیر ایشیا طیارے کا ملبہ مل گیا

سمندر میں گرکر تباہ ہونیوالے ائیر ایشیا طیارے کا ملبہ مل گیا

جکارتہ (نیوز ڈیسک) 28 دسمبر کو انڈونیشیا سے سنگاپور جانے والی ایئرایشیاء کی پرواز ’’کیو زیڈ 8501‘‘ دوران پرواز سمندر میں گر کر تباہ ہوگئی اور کئی دن کی مسلسل کوشش کے بعد بالآخر اس کا ملبہ تلاش کرلیا گیا۔ تاہم اب برطانوی اخبار ’’ڈیلی میل‘‘ نے تحقیقاتی ذرائع کے حوالے سے ایک تہلکہ خیز انکشاف کیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق تفتیشی افسران کا کہنا ہے کہ جب طیارہ کنٹرول سے باہر ہوا اس وقت جہاز کے کپتان ’’اریانتو‘‘ اپنی سیٹ پر موجود نہ تھے اور کنٹرول پائلٹ ’’ریمسے لیزل‘‘ کے پاس تھا۔تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ دوران پرواز جہاز کا ’’آگمنٹیشن کمپیوٹر خراب ہوگیا تھا۔ تاہم پائلٹ اپنے سیٹ پر بیٹھے ہوئے بھی اس کمپیوٹر کو ’’آف‘‘ کرسکتا تھا لیکن ایسا کرنے کی بجائے ’’کیپٹن اریانتو‘‘ اپنی سیٹ سے اٹھے اور معاون پائلٹ کی سیبٹ کے پیچھے لگا اس کا سوئچ نکال دیا۔ جس دوران کپتان اپنی سیٹ پر موجود نہ تھے، جہاز معاون پائلٹ کے کنٹرول سے نکل گیا۔ ابتدائی طور پر طیارہ تیزی سے بلندی پر گیا لیکن پھر یہ طاقت کھو بیٹھا اور تیزی سے نیچے سمندر کی جانب بڑھنے لگا۔ جب تک کپتان اریانتو اپنی سیٹ پر واپس آئے، بے حد دیر ہوچکی تھی۔ طیارے کا بلیک باکس مل چکا ہے۔ حادثے کو پائلٹ کی غلطی قرار دینا فی الحال قبل از وقت ہوگا۔ ملبہ مل گیا

مزید : صفحہ آخر