اسلام آباد کی ظالم سرکار اور بلوچستان کے سردار غریبوں کا خون چوس رہے ہیں ،سراج الحق

اسلام آباد کی ظالم سرکار اور بلوچستان کے سردار غریبوں کا خون چوس رہے ہیں ...

 سبی ( آئی این پی ) جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکمران خوف میں مبتلا ہیں ۔اسلام آبادکے حکمران بلٹ پروف گاڑیوں اور فول پروف سیکیورٹی انتظامات کے بغیر اپنے بنگلوں سے نہیں نکلتے ،عام آدمی کی جان و مال اور عزت محفوظ نہیں ۔ اسلام آباد کی ظالم سرکار اور بلوچستان کے سردار سب ایک ہیں جو غریبوں کا خون چوس رہے ہیں ،یہ ایک ہی کلب کے لوگ ہیں جو گزشتہ 68سال سے عوام کا استحصال کررہے ہیں ۔ملک میں ظالم اور مظلوم کی جنگ ہے ۔ظالم متحد اور مظلوم منتشر ہیں ،جماعت اسلامی مظلوموں اور محروموں کو ان ظالموں کے خلاف متحد کرنے کی جدوجہد کررہی ہے ،جس دن غریب عوام متحد ہوگئے وہ محلوں اور بنگلوں میں رہنے والوں کے اقتدار کا آخری دن ہوگا۔ بلوچستان وسائل سے ما لا مال ہے لیکن عوام پریشان اور بدحال ہیں ،مسائل سندھی ،پنجابی یا بلوچی صدر اور وزیر اعظم بننے سے نہیں قرآن و سنت کے عادلانہ نظام سے حل ہونگے۔وہ سبی میں آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب کررہے تھے ۔ کانفرنس میں حاجی داؤد خان رند ،شاہد چانڈیو،میجر عبدالکریم ،مفتی کفایت اللہ ،عبدالصمدمرغزانی ایڈووکیٹ،احمد خان بہتال،میر مظفر نذر ابڑو،مولانا عبدالحق ہاشمی ، جماعت اسلامی بلوچستان کے سیکریٹری جنرل بشیر احمد ماندزئی ،ضلعی امیر مولانا گل محمد بلوچ اور صوبہ بھر کے قبائلی رہنماء اور سماجی شخصیات نے شرکت کی ۔ انہوں نے کہا کہ شریعت اورآئین کی رو سے بلوچستان کو اس کے وسائل کا حصہ ملنا چاہئے ،بلوچستان میں اعلیٰ تعلیمی اداروں کا قیام اور دیہاتوں میں پرائمری اور مڈل سکول اور ٹیکنیکل انسٹیٹیوٹ ادارے بنائے جائیں ۔بلوچ محب وطن ہیں انہیں غدارکہہ کر دور ہٹانے کی بجائے سینے سے لگایا جائے ۔اسلام آباد میں بیٹھی اشرافیہ کے اسی طرز عمل نے مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنایا تھا۔جماعت اسلامی ہر فورم پر بلوچستان کے عوام کے حقوق کی آواز بلند کرتی رہے گی اور بلوچستان کے عوام کو ان کے حقوق دلانے کیلئے تمام آئینی راستے اختیار کرے گی ۔ناراض بلوچوں کو راضی کرنے اور منانے کیلئے قومی قیادت کو بلوچستان لیکر آئیں گے ،وزیر اعظم کو سب سے زیادہ توجہ بلوچستان کے مسائل کی طرف دینی چاہئے تھی۔جب تک بلوچستان کا مسئلہ حل نہ ہو وزیراعظم کو کابینہ کا اجلاس کوئٹہ میں کرنا چاہئے ۔سراج الحق نے کہاکہ جس ملک کے حکمران شیش محلوں میں رہنے کے عادی ہوں اس کے عوام جھونپڑیوں میں رہنے پر مجبور ہوجاتے ہیں ۔عوام عزت کی زندگی چاہتے ہیں تو انہیں ان سانپوں اور بچھوؤں سے چھٹکارا حاصل کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ غریبوں کے بچوں کی قسمت اس وقت سنورے گی جب عوام اپنے نفع و نقصان کا فیصلہ وڈیروں ،جاگیرداروں او ر سرمایہ داروں کی بجائے خود کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان میں دینی اور لادینی کی تقسیم نہیں چاہتے ،ملک کے اٹھارہ کروڑ عوام اسلام اورپیغمبر اسلام سے گہری محبت کرتے اور ملک میں نظام مصطفےٰ کا نفاذ چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اسلامی پاکستان کے لئے خوشحال بلوچستان ضروری ہے ،اگر بلوچستان میں بدامنی کا ڈیرہ رہا تو پاکستان کسی صورت ترقی و خوشحالی کی منزل حاصل نہیں کرسکتا

مزید : صفحہ اول