ڈاکٹروں کی ہڑتال ، گرفتار بھتہ خور نے ”مسیحاﺅں“ کو ہدف بنانے کی وجہ بتادی

ڈاکٹروں کی ہڑتال ، گرفتار بھتہ خور نے ”مسیحاﺅں“ کو ہدف بنانے کی وجہ بتادی
ڈاکٹروں کی ہڑتال ، گرفتار بھتہ خور نے ”مسیحاﺅں“ کو ہدف بنانے کی وجہ بتادی

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی میں ڈاکٹروں کی ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کے خلاف پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کی اپیل پر نجی و سرکاری ہسپتالوں میں ڈاکٹروں نے ہڑتال کی اور حکومت کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی ، ڈاکٹروں سے بھتہ خوری کرنے پر گرفتارہونیوالے ملزم نے انکشاف کیاکہ ڈاکٹرپڑھے لکھے لوگ ہوتے ہیں ، دھمکی دینے پر جلد ہی مطالبہ مان لیتے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق بھتہ خوری کے خلاف سرکاری و نجی ہسپتالوں میں ہڑتال کی گئی اور ڈاکٹروں نے مریضوں کے معائنے سے انکار کردیا جس کی وجہ سے مریضوں کومشکلات کاسامنا کرناپڑا۔ احتجاجی ڈاکٹروں نے بتایاکہ جنوری میں 10سے 15ڈاکٹروں کو بھتے کی پرچیاں موصول ہوچکی ہیں اور کم سے کم 10لاکھ روپے بھتے کی پرچی دی جاتی ہے ، بھتہ نہ دینے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جاتی ہیں ۔

دوسری طرف خاتون ڈاکٹر سے بھتہ لینے والے ملزم نے پولیس حراست میں نجی ٹی وی چینل سے گفتگوکرتے ہوئے بتایاکہ خاتون ڈاکٹرلبنیٰ اُس کا فون ہی نہیں سن رہی تھیں جس پر پرچی کے ذریعے اُس نے کریکر حملے کی دھمکی دی توخاتون ڈاکٹر سے فوری رابطہ ہوگیا۔ ڈاکٹروں کے آسان ہدف ہونے سے متعلق سوال کے جواب میں گرفتارملزم نے بتایاکہ پڑھے لکھے لوگ ہوتے ہیں ، دھمکی دینے پر جلد ہی ڈرجاتے ہیں اور مطالبات ماننے پر تیارہوجاتے ہیں ۔

مزید :

کراچی -