مقابلہ حسن میدان جنگ بن گیا ، حسینائیں گتھم گتھا

مقابلہ حسن میدان جنگ بن گیا ، حسینائیں گتھم گتھا
مقابلہ حسن میدان جنگ بن گیا ، حسینائیں گتھم گتھا

  


برازیلیا (نیوز ڈیسک) مقابلہ حسن میں شرکت کرنے والی حسینائیں بہت نازک اندام اور چھوٹی موٹی سمجھی جاتی ہیں اور ان کے باعث مقابلے میں مسکراہٹیں بکھری نظر آتی ہیں مگر برازیل کے ”میس امیزون“ مقابلہ حسن کے آخری لمحات پر ایک حسینہ نے ایسا وار کیا کہ دیکھنے والے اس کے جلال کو دیکھتے ہی رہ گئے۔

اس مقابلے کے آخری مرحلے میں 12 حسینائیں تھیں اور منصفین نے 20 سالہ کیرولینا تولیدو کو فاتح جبکہ 23 سالہ شیسلین ہامالہ کو دوئم قرار دیا تھا۔ جب فاتح حسینہ کو تاج پہنایا جا رہا تھا تو اچانک سارے کیمرے اور سب کی آنکھیں شیسلین کی طرف متوجہ ہو گئیں جو پھنکارتی ہوئی کیرولین کی طرف بڑھی اور اس کے سر سے تاج کھینچ کر زمین پر دے مارا اور اس کے بعد پیر پٹختی ہوئی تقریب سے باہر چلی گئی۔

ماضی انسان زیادہ عقلمند تھا یا آج کا ؟سائنس نے جواب دے دیا

ٹی وی پر براہ راست دکھائے جانے والے اس دلچسپ منظر کو لاکھوں لوگوں نے دیکھا اور حاضرین نے اپنے موبائل فونز میں ریکارڈ کر لیا۔ حیران و پریشان منتظمین نے بھاگ کر ٹیڑھے میڑھے تاج کو اٹھایا اور اسے دوبارہ دم بخود فاتح حسینہ کے سر پر رکھا۔ شیسلین کا کہنا ہے کہ مس امیزون مقابلے میں پیسہ چلایا گیا ہے ار سازش کے ذریعے اسے ملکہ حسن نہیں بننے دیا گیا اور اس نے ’جعلی فاتح‘ کا تاج زمین پر پٹخ کر ثابت کر دیا ہے کہ وہ امیزون میں پیسہ نہیں چلنے دے گی۔ واضح رہے کہ مس شیسلین اس سے پہلے دو دفعہ یہ مقابلہ جیت چکی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس