سانپ کا گوشت کھانا شہری کو بہت مہنگا پڑ گیا

سانپ کا گوشت کھانا شہری کو بہت مہنگا پڑ گیا
سانپ کا گوشت کھانا شہری کو بہت مہنگا پڑ گیا

  


ہرارے (نیوز ڈیسک) دنیا کے سب سے لمبے اژدھے پائیتھن کا تصور کرکے ہی انسان کانپ جاتا ہے مگر زمبابوے میں ایک صاحب اس خوفناک سانپ کا گوشت کھانے کے الزام میں گرفتار کر لئے گئے ہیں ۔

دنیا کی انوکھی ترین خاتون جو 40 برس سے مسکرائی نہیں کیونکہ ۔۔۔

”آضار“ نیوز ڈے کے مطابق پولیس کو اطلاع ملی تھی کہ 58 سالہ شخص چویل مارامناسانپ کی کھال سکھاتے ہوئے پائے گئے ہیں ۔پولیس نے مارامنا کے گھر پہ چھاپہ تو پائیتھن نسل کے سانپ کی خشک کھالیں ملیں اور فرج میں اژدھے کا گوشت بھرا پڑا تھا۔زمبابوے میں اس اژدھے کی نسل پہلے ہی ناپید ہونے کے خطرے سے دوچار ہےاور اس کا شکار جرم ہے۔مارا منا کاکہناتھا کہ وہ پائیتھن کے گوشت کو شوقین نہیں ہیں بلکہ اسے دوا کے طور پر استعمال کرتے ہیں ۔ انہوں نے عدالت کو بتایا کہ انہیں شدید کمر درد کا سامنا تھااور پائیتھن کے گوشت سے اس میں کافی اضافہ محسوس ہو رہاتھا۔ عدالت نے ساری بات تفصیلا سننے کے بعد بارامناکو 9 سا ل کیلئے جیل بھیج دیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس