قبرستان مسمار کر کے سکول بنا لیا گیا،طلبہ کو آسیب نے جکڑ لیا

قبرستان مسمار کر کے سکول بنا لیا گیا،طلبہ کو آسیب نے جکڑ لیا
قبرستان مسمار کر کے سکول بنا لیا گیا،طلبہ کو آسیب نے جکڑ لیا

  

کنگسٹن (نیوز ڈیسک)کریبین سمندر میں واقع جزائر پر مشتمل ملک جمیکا کے ایک سکول کے بچوں پر ایسی بھیانک آفت نازل ہوئی ہے کہ ہر کوئی خوف و ہراس میں مبتلاء ہو گیا ہے، اور پریشان حال والدین اس مصیبت کی وجہ سکول انتظامیہ کی ایک سنگین غلطی کو قرار دے رہے ہیں۔ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق آڈری سمتھ نامی خاتون کا کہنا ہے کہ ان کی 11 سالہ بیٹی بھی جنجر ہل آل ایج سکول کی طالبہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سینٹ الزبتھ میں واقع سکول کی انتظامیہ نے ملحقہ قبریں کھود ڈالیں اور زمین ہموار کرکے اس کے اوپر سکول کی عمارت بنا ڈالی، جس کے بعد سکول کے بچوں کو آسیب نے جکڑلیا ہے۔آڈری نے بتایا کہ ان کی بیٹی کبھی چیخنے چلانے لگتی ہے اور عجیب و غریب انداز میں اچھل کود کرتی ہے تو کبھی بیہوش ہوجاتی ہے۔ جمیکن ویک اینڈ سٹار سے بات کرتے ہوئے 47 سالہ خاتون کا کہنا تھا کہ انہیں یقین ہے کہ سکول کی جانب سے قبریں کھود ڈالنے کی وجہ سے بچوں کو بدروحوں نے نشانہ بنایا اور ان کی بیٹی کے علاوہ بھی متعدد بچے متاثر ہوئے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4