خواتین کو سیاسی و سماجی طور پر خودمختار بنانے کیلئے کوشاں ہیں،مہناز رحمن

خواتین کو سیاسی و سماجی طور پر خودمختار بنانے کیلئے کوشاں ہیں،مہناز رحمن

کراچی (اسٹاف رپورٹر)عورت فاؤنڈیشن پاکستان کی رینجنل ڈائریکٹر مہناز رحمن نے کہا ہے کہ عورت فاؤنڈیشن کا قیام 1986 میں آیا۔ اس کے قیام کا بنیادی مقصد خواتین کے اندر چھپی ہوئی صلاحیتوں کو اجاگر کرنا اور ان میں اس بات کا شعور پیدا کرنا ہے کہ انہیں قوانین کے تحت کن کن سہولتوں کا حق حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرد عورت کے مسائل کو کس طرح نہیں سمجھ سکتا جس طرح کوئی عورت، عورت کے مسائل کو سمجھ سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمدرد یونی ورسٹی میں USAID کے تحت اس انٹرن شپ کا بنیادی مقصد بھی خواتین میں معاشی خودمختاری پیدا کرنا ہے۔ انہوں نے یہ بات مقامی ہال میں ہمدرد یونی ورسٹی میں بین الاقوامی امریکی ادارہ برائے ترقی یو ایس ایڈ کے صنفی مساوات پروگرام کے تحت انفارمیشن ٹیکنالوجی میں خواتین گریجویٹ کے لیے انٹرن شپ کے اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ اس انٹرن شپ کے لیے ہمدرد یونی ورسٹی کا انتخاب شہید پاکستان حکیم محمد سعید پاکستان سے بے لوث محبت اور تعلیم و صحت کے میدان میں بے پناہ خدمات پر کیا تھا۔ حکیم صاحب خدمت کے اعلیٰ شعار پر فائز تھے۔ USAID کے 40 ملین ڈالر پروگرام کا مقصد خواتین کو انصاف مہیا کرنے کی سہولت دینا اور ان کے لیے معاشرے میں مواقع پیداکرنا اور ان کو سیاسی و سماجی طور پر خودمختار بنانا ،گورنمنٹ سول سوسائٹی کو اس سلسلے میں تقویت دینا اور صنفی بنیاد پر تشدد کے خاتمے کی کوشش کرنا ہے۔ ہمدرد انسٹی ٹیوٹ اوف انجینئرنگ ٹیکنالوجی کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر پرویز اختر جوکہ تقریب کے مہمان خصوصی تھے نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس انٹرن شپ میں کراچی ریجن سے انفارمیشن ٹیکنالوجی سے فارغ التحصیل 100 خواتین کا انتخاب کیا جائے گا جس میں ہمدرد یونی ورسٹی کی 5 خواتین بھی شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کے لیے اس طرح کی انٹرن شپ ان میں حوصلہ مندی اور خود اعتمادی پیدا کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چار ہفتے کے اس کورس میں انہیں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور لیبر قوانین سے متعلق کورس کرایا گیا۔ اس موقع پر انہوں نے پروجیکٹ ٹیم بالخصوص پروجیکٹ لیڈر پروفیسر ڈاکٹر عقیل الرحمن، پروجیکٹ منیجر انجینئر اسد الرحمن فائنانس اور ایڈمن کے ایس ایم کاشف عالم کو اس کامیاب پروگرام کے انعقاد پر مبارکباد بھی پیش کی۔تقریب کے آخر میں انٹرن شپ ختم کرنے پر خواتین کو سرٹی فیکٹ بھی دیئے گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر