خط لکھنے والے قطری کو عدالت میں بلانا چاہیے،حکومت عدالتی معاملات میں مداخلت کرتی ہے:سابق چیف جسٹس سجاد علی شاہ

خط لکھنے والے قطری کو عدالت میں بلانا چاہیے،حکومت عدالتی معاملات میں مداخلت ...
خط لکھنے والے قطری کو عدالت میں بلانا چاہیے،حکومت عدالتی معاملات میں مداخلت کرتی ہے:سابق چیف جسٹس سجاد علی شاہ

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا ہے کہ خط لکھ کر بھیجنے والے قطری شہزادے کو عدالت میں بلانا چاہیے لیکن ہماری حکومت عدالتی معاملات میں مداخلت کرتی ہے اور کام میں رکاوٹ ڈالتی ہے۔

ہائی کورٹ :سی ایس ایس کے امتحان میں عمر کی رعایت ختم کرنے پرفیڈرل پبلک سروس کمیشن سے جواب طلب

اے آر وائے نیوز کے پروگرام”آف دی ریکارڈ“ میں گفتگو کرتے ہوئے (ر)جسٹس سجاد علی شاہ کا کہناتھا کہ ملک میں بریف کیس والے کام آج بھی چلتے ہیں اور انصاف کو خریدنے کی کوشش کی جاتی ہے لیکن کچھ ایماندار لوگوں کو کرپشن کے پیسوں میں تول کر خریدا نہیں جاسکتا۔انہوں نے کہا کہ مکمل انصاف کا مطلب ہے سچ تک پہنچنا مگر ہمارے ملک میں انصاف اور سچ کی راہ میں روڑے اٹکائے جاتے ہیں،جس کی ایک مثال ماضی میں سپریم کوٹ پر حملہ ہے ۔میرے پاس پانامہ کے کاغذات بھی آئے جن میں شریف خاندان کے افراد کے ہی نہیں ان کیساتھ ساتھ دیگر افراد کے نام بھی درج تھے، اب فیصلہ عدالت پر منحصر ہے وہ جو بھی فیصلہ سنائے گی سب کو ماننا پڑے گا۔

مزید : اسلام آباد