لاہور پولیس کے پاس ہتھکڑیوں کے بعد گاڑیاں بھی کم پڑگئیں،ملزموں کو موٹرسائیکلوں پر عدالت لانا شروع کردیا

لاہور پولیس کے پاس ہتھکڑیوں کے بعد گاڑیاں بھی کم پڑگئیں،ملزموں کو ...
لاہور پولیس کے پاس ہتھکڑیوں کے بعد گاڑیاں بھی کم پڑگئیں،ملزموں کو موٹرسائیکلوں پر عدالت لانا شروع کردیا

  

لاہور(نامہ نگار)لاہور پولیس کے پاس ہتھکڑیوں کی کمی کے بعد اب ملزموں کو عدالتوں میں پیش کرنے کے لئے گاڑیاں بھی کم پڑ گئیں، پولیس نے ملزموں کو گاڑیوں کی بجائے موٹر سائیکلوں پر عدالتوں میں پیش کرنا شروع کر دیاہے۔تھانہ باغبانپورہ کے اے ایس آئی اقبال نے منشیات کے مقدمے میں ملوث ملزم فاروق کو جسمانی ریمانڈ لینے کے لئے سیشن عدالت پیش کیا اور جسمانی ریمانڈ حاصل کرنے کے بعد ملزم کو موٹر سائیکل پر بٹھا کر کینٹ کچہری کسی دوسرے مقدمے میں پیش ہوا ، پولیس افسر ملزم کو موٹر سائیکل پر بٹھا کر عدالتوں کے چکر لگاتا رہا ، اے ایس آئی اقبال نے کہا کہ ملزموں کو پیش کرنے کے لئے گاڑیاں نہیں ہیں اور گاڑیوں کی کمی اعلیٰ پولیس افسروں کے نوٹس میں ہے، لاہور پولیس کی طرف سے ملزموں کو موٹر سائیکلوں پر عدالتوں میں پیش کرنے کے واقعات پر حکام خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں،واضح رہے متعدد بارعدالتوں میں جن ملزموں کو پیش کیا جاتا ہے انہیں ہتھکڑی کی بجائے رسیوں یا پھر کسی دوسری چیز سے ان کے ہاتھ باندھ کرپیش کیا جاتا ہے جس کی وجہ پولیس اہلکارں کی جانب سے ہتھکڑیوں کی کمی بتائی جاتی ہے ۔

مزید : لاہور