چارٹرڈآف ڈیمانڈ پرعملدرآمد کیلئے مہاجرین جموں کشمیر کی بھوک ہڑتال شروع

چارٹرڈآف ڈیمانڈ پرعملدرآمد کیلئے مہاجرین جموں کشمیر کی بھوک ہڑتال شروع

مظفرآباد(بیورورپورٹ)مہاجرین جموں و کشمیر نے 6نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ پر عملدرآمد کیلئے آزادکشمیر بھر میں بھوک ہڑتال شروع کردی، باقائدہ کیمپ قائم کردیئے گئے۔ جموں کشمیر ریفیوجی کمیٹی کی کال پر ریاستی دارالحکومت سمیت ضلع باغ، کوٹلی اور میرپور پریس کلب کے سامنے بھوک ہڑتالی کیمپ مہاجرین کی بڑی تعداد میں شرکت ، حکومت فی الفور مسائل حل کرے بصورت دیگر احتجاج جاری رکھنے کا اعلان۔اپوزیشن نے مہاجرین جموں کشمیر کے جائز مطالبات کی حمایت کردی، سیاسی شخصیات سمیت سماجی ، تجارتی، وکلاء برادری کی اظہار یکجہتی کیلئے شرکت۔ جموں کشمیر ریفیوجی ایکشن کمیٹی کے چیئرمین گوہر کشمیری، صدر راجہ عارف، سینئر نائب صدر چوہدری مشتاق، جعفر بیگ، جنرل سیکرٹری فیصل کشمیری، نائب صدر محمد یونس، چیف آرگنائزر راجہ افتیاز،مظفر کشمیری ، علی محمد بٹ، سردار جاوید، قاسم قریشی، تنظیر اقبال، نذیر بٹ، طاہر بٹ، ظاہر بٹ، راجہ ساجد، فاروق فردوس، محمد معروف خان، تنویر شاہ، رفیع لون، عبدالصمد بٹ، ناظم الدین شیخ، فوجدار بٹ، عبدالحمید بٹ، شاکر بٹ، شاہین عباسی، محمد سلیم، تیمور خان، جہانگیر شیخ، سید غازی شاہ نے کہا ہے کہ مہاجرین سے انصار کی محبت ناقابل فراموش ، حکومت کا مہاجرین کیساتھ روا رکھے جانیوالا سلوک سوتیلی ماں جیسا ہے۔ وزیراعظم پاکستان شاہدخاقان عباسی، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ مہاجرین کے جائز مطالبات پر عملدرآمد کروائیں۔ سابق وزیراعظم پاکستان و صدر پاکستان مسلم لیگ ن میاں محمد نوازشریف مہاجرین کے چارٹر آف ڈیمانڈ پر عملدرآمد کروانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔ وزیراعظم آزادکشمیر نے اسمبلی فلور پر کھڑے ہو کر گزارہ الاؤنس میں اضافے کا اعلان کیا تھا اس پر عملدرآمد کیوں نہیں کیا جارہا، مہاجرین جموں کشمیر 1989 ء کی مستقل آبادی کیلئے اقدامات کیوں نہیں اٹھائے جارہے ہیں۔ مہاجرین کے ملازمتوں والے چھے فیصد کوٹہ پر عملدرآمدکیوں نہیں کیا جارہا۔ بھوک ہڑتالی کیمپ میں شریک مہاجرین نے مزید کہا کہ ہمارا جائز چھے نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ حکومت کے پاس موجود ہے مگر کوئی شنوائی نہیں ہو رہی جس میں گزارہ الاؤنس میں مہنگائی کے تناسب سے معقول اضافہ ، ملازمتوں کے چھے فیصد کوٹہ پر سوفیصد عملدرآمد ، کیمپوں میں زندگی کی بنیادی سہولیات فراہمی، مہاجرین کی مستقل آباد کاری کیلئے ٹھوس اقدامات اور مہاجرین کے طلبہ و طالبات کیلئے مفت تعلیم کے نوٹیفکیشن پر عملدرآمد شامل ہے،انہوں نے کہا کہ پاکستان سے محبت ہمارے ایمان کا حصہ ہے ، تحریک آزادی کشمیر اور تکمیل پاکستان کیلئے آخری سانس تک جدوجہد جاری رکھیں گے مگر حکومت کے رویوں سے مہاجرین عاجز آچکے ہیں، ہمارے بنیادی مسائل حل نہیں کیئے جارہے ہیں ہمارے حقوق جو ہمیں حاصل تھے ان پر سانپ بن کر مافیا قابض ہے ، مسائل حل کرنے کے بجائے بے بسی دکھائی جارہی ہے۔ ہم بھی اس ریاست کے شہری ہیں ہمیں بھی جینے کا حق ہے، ہمارے مطالبات پر فی الفور عملدرآمد کیا جائے ۔ اس موقع پر مظفرآباد میں قائم احتجاجی دھرنا میں سابق وزیر حکومت خواجہ فاروق احمد، سینٹرل بار ایسوسی ایشن کے صدر راجہ آفتاب ، شوکت جاوید میر، عبدالعزیز علوی سمیت سیاسی ، سماجی، تاجر برادری کی مہاجرین سے اظہار یکجہتی کیلئے بھوک ہڑتالی کیمپ میں شرکت کی اور حکومت سے مہاجرین کے مسائل حل کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر