کسٹم نے پولینڈ سے پشاوردرآمد ہونیوالی ہیروئن اور دھماکہ خیزموادمیں استعمال ہونیوالے کیمیکل کی بڑی کھیپ قبضہ میں لے لی

کسٹم نے پولینڈ سے پشاوردرآمد ہونیوالی ہیروئن اور دھماکہ خیزموادمیں استعمال ...
کسٹم نے پولینڈ سے پشاوردرآمد ہونیوالی ہیروئن اور دھماکہ خیزموادمیں استعمال ہونیوالے کیمیکل کی بڑی کھیپ قبضہ میں لے لی

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ڈائریکٹر جنرل کسٹم انٹیلی جنس شوکت علی کو اسلام آباد میں ملنے والی رپورٹ کے مطابق کسٹم حکام نے ملکی تاریخ کا ایک بڑا سکینڈل پکڑا ہے جس کے مطابق ہیروئن اوردھماکہ خیز مواد میں استعمال ہونیوالا 15 ہزار پانچ سو بیس لیٹر خطرناک کیمیکل برآمد کرلیا گیا ہے۔

پاکستان کسٹم حکام نے ملکی تاریخ میں بڑی کارروائی کرتے ہوئے پولینڈ سے پشاوردرآمد ہونیوالی ہیروئن اور دھماکہ خیزموادمیں استعمال ہونیوالے خطرناک کیمیکل کی بڑی کھیپ قبضہ میں لے لی۔کنٹینرمیں درآمدہونیوالے700 پلاسٹ کینوں میں 15520لٹرکیمیکل (acetic anhydride)کی مالیت 1.5ملین ڈالرہے۔کراچی کسٹم حکام نے درآمدی اشیاءکی سخت مانیٹرنگ کے دوران مشکوک کنٹینرکوقبضے میں لیا تھا جس کےبل پرپی سی ٹی کوڈ نہیں تھا اورا س پر درج پتہ بھی سادہ ساتھا،24جنوری کوکنٹینر کو آر اینڈ ڈی سیکشن کے ذریعے سسٹم میں بلاک کردیاگیا اور 31 جنوری کو ٹرمینل آپریٹرز اور دیگر متعلقہ افرا دکی موجودگی میں چیف کلکٹر عبدالرشید شیخ نے دیگر سینئر افسران کے ہمراہ کنٹینر کا معائنہ کیا تو پتہ چلا کہ کنٹینر میں زہریلا کیمیکل پشاور لیجایا جارہا تھا۔

چیف کلکٹر نے ذمہ داروں کو ہدایت کی کہ کنٹینر کا پتہ لگانے، ملوث افراد کا سراغ لگانے اور گرفتار کرنے کیلئے جدید سائنسی طریقے استعمال کئے جائیں۔ زہریلا کیمیکل (acetic anhydride) صرف وہی صنعتی صارفین کو درآمد کرنے کی اجازت ہے جس کو اس کا اختیار دیا گیا ہے اور اس زہریلے کیمیکل کی پاکستان درآمد امپورٹ پالیسی آرڈر 2016ءکی خلاف ورزی ہے۔ کیمیکل ہیروئن اور دھماکہ خیز مواد کی تیاری میں استعمال ہوتا ہے، پورٹ قاسم انتظامیہ اس حوالے سے تفتیش کررہی ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد