ہڑپہ: بدکاری نہ کرنے پر خواجہ سرا پر گورو ساتھیوں کا تشدد

ہڑپہ: بدکاری نہ کرنے پر خواجہ سرا پر گورو ساتھیوں کا تشدد
ہڑپہ: بدکاری نہ کرنے پر خواجہ سرا پر گورو ساتھیوں کا تشدد

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ساہیوال (ویب ڈیسک) خواجہ سرا روبن جس نے مذہب اسلام قبول کرنے کے بعد اپنا نام محمد عبداللہ رکھ لیا ہے اور بدکاری جیسی برائی سے توبہ تائب ہوتے ہوئے اپنے آپ کو ڈانس کی حد تک محدود رکھتے ہوئے کہا کہ مجھے خواجہ سرا سونیا اور امجد بٹ جن کے پاس میں رہتا تھا، مجھے بدکاری کروانے پر مجبور کرتے ہیں۔

روزنامہ خبریں کے مطابق عبداللہ نے بتایا کہ یہ لوگ نہ صرف مجھے بدکاری نہ کرنے کی صورت میں تشدد اور نروان کروانے کی دھمکیاں بھی دیتے ہیں اس کے علاوہ مجھے بلیک میل کرنے کیلئے میرا قومی شناختی کارڈ بھی ضبط کرکے رکھنے کےساتھ ساتھ میرے نام سے ایک جعلی اسٹام بھی کروایا ہوا ہے۔

میں نے ان کے ارادوں کو بھانپتے ہوئے وہاں سے بھاگ کر اپنے قریبی ساتھی کے گھر 178/9-L میں پناہ لے رکھی ہے جو کہ مجھے ڈر ہے کہ یہ لوگ کہیں مجھے اغوا کرکے کوئی جانی نقصان نہ پہنچائیں اس لئے میرا اعلیٰ حکام سے مطالبہ ہے کہ مجھے فوری انصاف دلواتے ہوئے مجھ پر ظلم و زیادتی کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کئے جائیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /ساہیوال