کمرہ عدالت میں پاکستانی باپ نے بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے کو معاف کردیا ،اس دوران بیٹی چیخ کرکیا کہتی رہی ؟جان کر ہر پاکستانی کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

کمرہ عدالت میں پاکستانی باپ نے بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے کو ...
کمرہ عدالت میں پاکستانی باپ نے بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے کو معاف کردیا ،اس دوران بیٹی چیخ کرکیا کہتی رہی ؟جان کر ہر پاکستانی کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن )عدالت میں باپ نے 17سالہ معذور بیٹی سے زیادتی کرنے والے ملزم کو معاف کردیا ،اس دوران بہری بیٹی چیخ چیخ کر احتجاج کرتی رہی ۔زیادتی کیس کی سماعت کے دوران متاثرہ لڑکی کے باپ منیر احمد نے عدالت میں ایک بیان حلفی جمع کرایا جس میں درج تھا کہ اس نے علاقے کہ معزز لوگوں کے کہنے پر ملزم ادریس کو معاف کردیا ہے اور اب وہ اس کیس کی پیروی نہیں کرنا چاہتا۔منیر احمد نے کہا کہ اس نے غلطی سے ادریس پر زیادتی کا مقدمہ درج کرایا اور اگر عدالت سے رہا کردے تو مجھے کوئی اعتراض نہیں ہو گا ۔اس پر ایڈیشنل سیشن جج عرفان نسیم تارڑ ملزم کو عبوری ضمانت پر رہا کردیا ۔عدالت میں موجود لوگوں کے مطابق جس وقت ملزم کو معاف کیا جا رہا تھا ،اس دوران زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی چیخ چیخ کر احتجاج کرتی رہی اور وہ روتی بھی رہی لیکن کسی نے اس کی طرف دھیان نہ دیا ۔

قبل ازیں 9فروری 2016میں گوجر خان کے ایک پولیس اسٹیشن میں منیر احمد نے درخواست دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ مظفر گڑھ کا رہائشی ہے اور گوجر خان میں چوہدری فدا حسین کی حویلی میں جانوروں دیکھ بھال کرتا ہے ۔اس کا کہنا تھا کہ اس کے دو بیٹے اور چھ بیٹیاں ہیں جن میں سے ایک ذہنی معذور ہے ۔ایک دن جب وہ جانوروں کو پٹھے کھلا کر واپس حویلی میں جا رہا تھا تو اس نے دیکھا کہ ادریس اس کی بیٹی کے ساتھ زبردستی زیادتی کر رہا ہے ،منیر احمد کے وہاں آنے پر ادریس بھاگ گیا ۔اس کے بعد دوسال تک ملزم فرار رہا اور جس کے بعد اس نے خود ہی گرفتاری دے دی ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /راولپنڈی