تھوڑا سا شور مچا کر مسلمان روہنگیا کو بھول گئے لیکن اب وہ کس حال میں ہیں؟ میانمار سے ایسی خبر آگئی کہ جان کر ہر مسلمان شرم سے پانی پانی ہوجائے

تھوڑا سا شور مچا کر مسلمان روہنگیا کو بھول گئے لیکن اب وہ کس حال میں ہیں؟ ...
تھوڑا سا شور مچا کر مسلمان روہنگیا کو بھول گئے لیکن اب وہ کس حال میں ہیں؟ میانمار سے ایسی خبر آگئی کہ جان کر ہر مسلمان شرم سے پانی پانی ہوجائے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ینگون(مانیٹرنگ ڈیسک) میانمار میں روہنگیا مسلمانوں پر ہونے والے مظالم پر دنیا تھوڑا سا شور مچا کر بھول چکی ہے لیکن اب وہاں سے ایسی ہولناک خبرآ گئی ہے کہ جان کر ہر مسلمان اپنی خاموشی پر شرم سے پانی پانی ہو جائے۔ دی ٹائم کی رپورٹ کے مطابق میانمار میں فوج، پولیس اور بدھ دہشت گرد مسلمان مردوں کو زندہ زمین میں گاڑ کر ان پر تیزاب پھینک کر انہیں موت کے گھاٹ اتار رہے ہیں۔ گو درپائن(Gu Dar Pyin)کا قادر نامی روہنگیا مسلمان بنگلہ دیش کے پناہ گزین کیمپ تک زندہ پہنچنے میں کامیاب ہوا ہے جس نے بتایا کہ اس کے گاﺅں میں دو درجن سے زائد مردوں کو برمی فوج نے سینے تک زمین میں گاڑا اور پھر ان کے سر پر تیزاب انڈیل دیا گیا اور چہروں میں گولیاں مار کر انہیں ابدی نیند سلا دیا گیا۔

ایسوسی ایٹڈ پریس نے بھی اپنی رپورٹ میں ان لرزہ خیز واقعات کی تصدیق کی ہے۔ بنگلہ دیش میں واقع پناہ گزین کیمپ تک پہنچنے والے درجنوں روہنگیا مسلمانوں کے انٹرویو کرنے کے بعد ایسوسی ایٹڈ پریس نے بتایا ہے کہ برمی فوج اور بدھ دہشت گرد کئی دیہات میں مسلمان مردوں کو اس بے رحمانہ طریقے سے قتل کر رہے ہیں۔ وہ گاﺅں پر حملہ کرکے مردوں کو اس طریقے سے قتل کردیتے ہیں جبکہ خواتین کے ساتھ اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا کر گاﺅں چھوڑ کر نکل جانے کی وارننگ دے کر چھوڑ دیتے ہیں۔اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکیوں اور خواتین میں انتہائی کم عمر بچیاں بھی شامل ہیں۔ایسوسی ایٹڈ پریس نے اپنی رپورٹ میں ایک 3سالہ بچے کا ذکر بھی کیا ہے جس کے بازو میں گولی لگی ہوئی تھی اور اس کا پناہ گزین کیمپ میں علاج کیا جا رہا تھا۔

مزید : بین الاقوامی