’وہ میرے گھر میں داخل ہوا، میرے باپ کو لیٹنے کا کہا اور گن پوائنٹ پر میرا ریپ کردیا، پھر مجھے مسجد کے پیچھے لے کر گیا اور۔۔۔‘

’وہ میرے گھر میں داخل ہوا، میرے باپ کو لیٹنے کا کہا اور گن پوائنٹ پر میرا ریپ ...
’وہ میرے گھر میں داخل ہوا، میرے باپ کو لیٹنے کا کہا اور گن پوائنٹ پر میرا ریپ کردیا، پھر مجھے مسجد کے پیچھے لے کر گیا اور۔۔۔‘

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میںایک مسلمان نوجوان نے نا صرف گھر میں گھس کر باپ کے سامنے بیٹی کو جنسی درندگی کا نشانہ بنایا بلکہ بعد ازاں اس کے ساتھی نے بھی لڑکی کو ایک مسجد کے پیچھے لے جا کر درندگی کا نشانہ بنایا۔ ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق 19سالہ عقیب احمد نامی اس نوجوان نے متاثرہ لڑکی کے گھر کی کھڑی پر دستک دی۔ لڑکی نے جونہی کھڑکی کھولی، یہ پھلانگ کر اندر داخل ہو گیا۔ اس وقت گھر میں 25سالہ لڑکی اور اس کا باپ موجود تھے۔ ملزم نے اپنے پاس موجود پستول اس کے باپ پر تانی اور اسے بیڈ پر جا کر لیٹ جانے کو کہا۔

رپورٹ کے مطابق باپ جا کر بیڈ پر لیٹ گیا جس کے بعد ملزم نے لڑکی کے ماتھے پر پستول رکھی اور اسے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ اس سے زیادتی کرنے کے بعد اس نے لڑکی کو گن پوائنٹ پر آگے لگایا اور لے کر علاقے کی مسجد کے پیچھے چلا گیا جہاں ملزم کا دوسرا ساتھی ان کا انتظار کر رہا تھا۔ ملزم عقیب نے لڑکی اس دوسرے ساتھی کے حوالے کی اور خود چلا گیا۔ اس کے بعد اس دوسرے لڑکے نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔ رپورٹ کے مطابق پولیس نے دونوں ملزمان کو گرفتار کرکے شیفیلڈ کراﺅن کورٹ میں پیش کر دیا جہاں سے عقیب کو 15سال اور دوسرے ملزم کو 6سال قید کی سزا سنا کر جیل بھیج دیا گیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ