ہمیں پولیس نے میڈیا سے بات کرنے سے روک رکھا ہے، عاصمہ کے اہلخانہ کا الزام

ہمیں پولیس نے میڈیا سے بات کرنے سے روک رکھا ہے، عاصمہ کے اہلخانہ کا الزام
ہمیں پولیس نے میڈیا سے بات کرنے سے روک رکھا ہے، عاصمہ کے اہلخانہ کا الزام

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

مردان (ڈیلی پاکستان آن لائن) ٹی وی اینکر رابعہ انعم نے کہا ہے کہ جب میں عاصمہ کے گھر گئی تو اپنا کیمرہ باہر چھوڑ کر ان سے اجازت لینے کی غرض سے گھر کے اندر گئی، گھر والوں نے بتایا کہ انہیں پولیس نے کسی سے بھی بات کرنے سے روک رکھا ہے۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام ”آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ “ میں گفتگو کرتے ہوئے معروف نیوز اینکر اور پروگرام ”لیکن “ کی میزبان رابعہ انعم کا کہنا تھا کہ جب میں عاصمہ کے گھر گئی تو وہاں پر سادہ کپڑوں میں ڈی ایس پی موجود تھے ، عاصمہ کے گھر والوں نے کہا کہ پولیس نے ہمارا جینا حرام کر رکھا ہے، عاصمہ کا باپ ادھار پیسے لے کر سعودیہ گیا تھا ، وہ شدید بیمار بھی ہے جبکہ اس کے چچا ایک مزدور ہیں مگر پولیس عاصمہ کے گھر والوں کو گھر سے باہر نہیں نکلنے دیتی ، پولیس حکام آئے روز انہیں پریشان کرتے ہیں ، پولیس حکام آکر کہتے ہیں کہ اس افسر کو بیان ریکارڈ کراﺅ اور کبھی کسی دوسرے افسر کے سامنے بیان ریکارڈ کرانے کو کہا جاتا ہے۔ اہل خانہ کاکہنا تھا کہ اس وقت ہماری زندگی یہ ہے کہ ہم گھر سے باہر قدم نہیں رکھ سکتے اور نہ ہی کسی سے کوئی بات چیت کر سکتے ہیں۔

عاصمہ کی لاش ملنے کے بعد بھی مقامی پولیس کرائم سین پر نہیں گئی : رابعہ انعم

رابعہ انعم کا مزید کہنا تھا کہ اس سارے کیس میں پولیس کا کردار انتہائی تکلیف دہ رہا ہے ، پولیس حکام نے کیس کے دوران عاصمہ کے اہلخانہ سے کسی بھی قسم کا تعاون نہیں کیا اور نہ ہی اب انہیں انصاف دلانے کے لئے کوئی خاطر خواہ کارکردگی دکھائی جا رہی ہے۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /مردان