خیبر پختونخوا میں تبدیلی میں لے کر آؤں گا: نواز شریف، آپ مسلم لیگ (ن) کو موقع دیں صوبے کی تقدیر بد ل دینگے: مریم نواز

    خیبر پختونخوا میں تبدیلی میں لے کر آؤں گا: نواز شریف، آپ مسلم لیگ (ن) کو ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                                        سوات، مینگورہ،لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) قائد مسلم لیگ(ن) اورسابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے خیبرپختونخوا میں تبدیلی میں لیکر آؤں گا،اس صوبے کے لوگ ایک شخص کے جال میں پھنس گئے، نئے پاکستان اور تبدیلی کی تلاش میں پرانا پاکستان بھی تباہ و برباد کردیا۔مینگورہ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا جن کو آزما چکے ان کو بار بار آزمانا ٹھیک نہیں، یہاں کونسا نیا موٹروے اور بجلی کا منصوبہ لگا، وہ 300 ڈیم کہاں گئے؟ کہیں بلین ٹری منصوبہ نظر نہیں آیا، سوات والو نوازشریف نے لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا تھا، آپ کیسے ا س شخص کے جال میں پھنس گئے جس نے آپ سے ایک کروڑ نوکریوں اور گھروں کا وعدہ کیا تھا، یہاں ہزاروں کا مجمع ہے، پچاس لاکھ گھروں میں سے کسی کو گھر ملا؟ ووٹ لینے کے بعدکیا دیا؟ گھر نہ نوکری، بتاؤ آج ملک میں مہنگائی ہے یا نہیں؟ نواز شریف کا دور اچھا تھا یہ دور اچھا ہے؟ ہم عوام سے کبھی جھوٹ نہیں بولتے، آئندہ بھی سچ بولوں گا،کیونکہ میں اپنی عاقبت خراب نہیں کرسکتا۔آپ اس جال میں پھنس گئے اور ملک کا یہ حال ہوگیا، اللہ سے معافی مانگو، میں بھی مانگوں گا۔ آپ(ن) لیگ کو موقع دیں گے تو خیبرپختونخوا کی تقدیر بدل دیں گے۔ سوات والو نوازشریف آپ سے پیار کرتا ہے،آپ کی حالت پر ترس بھی آتا ہے۔ خیبر پختونخوا کے لوگ تو بہت سادہ اور سیدھے سادھے ہیں، نواز شریف کے پی ٹی آئی کی قیادت کا نام لئے بغیر مخاطب ہو کر کہااُن کو دھوکہ دیتے ہوئے آپ کو شرم نہیں آئی؟ آپ نے ان کے جذبات سے کھیلا، مزید کہا یہ بندہ خیبرپختونخوا سے باقی صوبوں میں ایکسپورٹ ہوا ہے، ایسے بندے کو کیوں اجازت دی جس نے پاکستان کو اجاڑ دیا، سابق وزیراعظم نے کہا پہلے آپ نے نوازشریف کو نکلنے دیا اب کہتے ہیں پاکستان کو نواز دو، آپ کو پچھلی باتوں کا جواب دینا پڑیگا۔ اگرہمیں اس صوبے میں 10 سال ملتے تو سب سے خوبصورت صوبہ ہوتا، مجھے نہ نکالاجاتا تو پورا یقین ہے آج ایک شخص بھی بیروزگار نہ ہوتا، گھروں میں روشنی کے چراغ جلتے، دوائیوں کے پیسوں کیلئے بھیک نہ مانگنی پڑتی۔ میں ہوتا تو آج غریبی نہیں خوشحالی ہوتی۔ میں یہاں ایک ایک منصوبہ اپنے سامنے مکمل کراؤں گا، یہ تو 8 تاریخ کو پتہ چلے گا، آپ مجھے چکر نہ دینا، میں پشتو ایسی بولوں گا کہ آپ بھی بھول جائیں گے، میں بہت زبردست پشتو بولتا ہوں۔ ہماری تو حکومت یہاں نہیں تھی، بتاؤ انہوں نے یہاں کیا بنایا؟ ہم یہاں گیس لیکر آئے، کالج اور یونیورسٹیاں بنائیں، لواری ٹنل بنائی۔قبل ازیں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کی سینئر نائب صدر مریم نواز نے کہا عمران خان کے بچوں کا مقدر اگر لندن ہے تو پھر پختونخوا کے بچوں کا مقدر جیل کیوں؟۔ سازشیں کرنیوالے ہمیشہ نہیں رہتے۔ آج نواز شریف نے آپ کو ان لوگوں کے تمام جھوٹ گنوائے جنہوں نے یہاں 10 سال تک حکومت کی ہے۔انہوں نے اتنے جھوٹ بولے کہ جن موکلوں اور جنوں کے سر پر حکومت کررہے تھے، آج وہ موکل اور جن بھی انہیں چھوڑ کر بھاگ رہے ہیں۔جس نے لوگوں کو چور چور کہا، آج وہ خود پاکستان کا سب سے بڑا چور ثابت ہوگیااور اس کا خاندان بھی چور نکلا، مگر میں نواز شریف کی بیٹی ہوں، میں کسی کی تکلیف اور دکھ پر خوشی نہیں منا سکتی۔ مریم نواز شریف نے جلسے کے شرکا کو مخاطب کرتے ہو ئے کہا میں آپ سے چند سوال کرنا چاہتی ہوں۔ نوجوان بتائیں کہ کیا جلاؤ گھیراؤ، مار دو، مر جاؤ، آگ لگادو، یہی سب کچھ ان کا مقدر ہے؟ آپ کو لیپ ٹاپس چاہئیں یا پیٹرول بم؟۔ آپ کو تعلیمی ادارے، اسکالر شپس چاہئیں یا پھر کیلوں والے ڈنڈے؟۔مریم نواز نے مزید کہا عمران خان کے بچے محفوظ مقام پر لندن میں بیٹھے ہیں تو پھر پاکستان کے نوجوان آ پ کے ورغلانے پر سلاخوں کے پیچھے کیوں پڑے ہیں؟، میں پوچھتی ہوں آپ کے ورغلانے کی وجہ سے آپ کی خواتین کارکنان 9 مئی کو ریاست پر حملہ کرنے پر سلاخوں کے پیچھے ہیں، تو ایک خاتون جس نے چوری کی وہ آج بنی گالہ کے محل میں قید کیوں ہے؟ وہ باقی عوام کی طرح جیل کی سلاخوں کے پیچھے کیوں نہیں؟۔انہوں نے شرکا سے خطاب کرتے ہو ئے کہا 8 فروری کو ووٹ کی پرچی کو محض پرچی نہ سمجھیں بلکہ اس سے آپ کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ہے۔ نواز شریف اور مریم نواز خیبر پختونخوا کو ترقی کرتا دیکھنا چاہتے ہیں۔

نواز شریف

   لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کہا ہے ملک میں استحکام کیلئے اکثریت والی حکومت چاہیے جبکہ پولیٹیکل ڈائیلاگ وقت کی ضرورت ہے۔لا ہو ر میں مسیحی عمائدین سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی عمران خان کو سزا اُن کے خود کی وجہ سے ملی ہے، انہوں نے سستی شہرت کیلئے ریاست داؤ پر لگا دی، آئی ایم ایف کی کڑوی گولی کے سوا ہمارے پاس کوئی چارہ نہیں تھا۔ شہباز شریف نے کہا پاکستان کی ترقی میں مسیحی برادری کا اہم کردار ہے، مسیحی برادری کی تعلیم، دفاع خدمات قابل تحسین ہیں، ملک میں مذہبی برادریوں کو امن و سکون سے رہنے کا حق حاصل ہے۔ نواز شریف نے مذہبی برادریوں سے شفقت و احترام کا رشتہ جوڑا، میرے دور میں اقلیتی برادریوں کیساتھ کچھ واقعات ہوئے اور ہم نے ان واقعات کے ذمے داروں کو قانون کے کٹہرے میں لانے کی کوشش کی۔ تمام مذاہب کا احترام تمام مکاتب فکر پر لازم ہے۔

شہباز شریف

مزید :

صفحہ اول -