پاور سیکٹر کا گردشی قرضہ 660ارب سے بڑھ گیا، بجلی کی پیداوار میں 6ہزار میگاواٹ کی کمی

پاور سیکٹر کا گردشی قرضہ 660ارب سے بڑھ گیا، بجلی کی پیداوار میں 6ہزار میگاواٹ ...

 اسلام آباد (آن لائن) بجلی کا گردشی قرضہ 660 ارب روپے سے بڑھ گیا ۔ ملک کو بجلی کی پیداوار میں 6 ہزار میگاواٹ کی کمی کا سامنا ، فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث نجی پاور پلانٹس اور آئل کمپنیوں کو ادائیگیاں نہیں ہو رہیں جس کی وجہ سے بجلی کی پیداوار بری طرح متاثر ہو رہی ہے ۔ ذرائع کے مطابق بجلی کا گردشی قرضہ 660 ارب روپے سے تجاوز کر گیا ہے جس کی وجہ سے پاور پلانٹس اور آئل کمپنیوں کو ادائیگیاں بھی نہیں کی جا رہی ہیں جس کی وجہ سے بجلی بنانے والی کمپنیوں نے بجلی پیدا کرنے سے بھی معذرت کی ہے اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کے پیسے ادا کر دیئے جائیں کیونکہ کمپنیاں مالی بحران کا شکار ہو رہی ہیں ۔ ذرائع کے مطابق بجلی بنانے والی کمپنیوں نے وزارت خزانہ کو ایک خط بھی لکھا ہے کہ ہمیں آسان اقساط پر قرض دیئے جائیں تاکہ بحران کو کم کیا جا سکے ۔ دوسری جانب نہروں کی بھل صفائی کی وجہ سے پن بجلی کی پیداوار بھی خاصی کمی ہوئی ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ موجودہ سنگین صورت حال کے حوالے سے وزیر اعظم کو بھی مراسلہ جاری کیا گیا ہے کہ اس سنگین صورت حال پر کیا کیا جانا چاہئے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر بجلی بنانے والی کمپنیوں کو ادائیگیاں نہ کی گئیں اور انہوں نے بجلی بنانی بند کر دی تو پھر ملک میں 18 سے 20 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ شروع ہو جائے گی جس پر جلد قابو پانا ممکن نہیں ہو گا ۔

مزید : کامرس