علماء کرام قوم میں اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کریں،حافظ عبد الرحمن

علماء کرام قوم میں اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کریں،حافظ عبد ...

لاہور(نمائندہ خصوصی)جماعۃ الدعوۃ سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبد الرحمن مکی نے کہا ہے کہ مسلم معاشروں میں فرقہ وارانہ قتل و غارت گری سے اسلام دشمن قوتیں فائدے اٹھا رہی ہیں۔ علماء کرام اپنی ذمہ داری ادا کریں اور قوم میں اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کریں۔ نوجوان نسل کی تربیت کے لیے انہیں اسلام دشمن قوتوں کی سازشوں سے بچانا انتہائی ضروری ہے۔ مسلمان ایک امت ہیں‘اسلام میں فرقہ واریت اور پارٹی بازی کا کوئی تصور نہیں۔ قرآن و سنت پر عمل پیرا ہونے سے ہی فرقہ واریت کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے۔ وہ جماعۃالدعوۃ لاہور کے زیر اہتمام گول چکرصدر بازار کینٹ میں سیرت البنیﷺکانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر جماعۃ الدعوۃ لاہور کے مسؤل ابوالہاشم ربانی، شرقی سٹی کے مسؤل پروفیسر جاوید اقبال اور دیگر مقامی ذمہ داران بھی موجود تھے۔ کانفرنس میں مختلف مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ عبدالرحمن مکی نے کہاکہ اس وقت اُمت مسلمہ کی جو حالت زار ہے‘ یہ سب تعلیمات نبوی ﷺ سے رو گردانی کے باعث ہے۔

سیرت النبی ﷺ کو ترک کرنے کے باعث دشمنوں قوتوں کو دنیا بھر میں مسلم علاقوں میں کھل کھیلنے کا موقع ملا۔ کفار کے مسلمانوں پر مظالم کا حل آج بھی وہی ہے جو دور نبوت میں نبی اکرم ﷺنے اختیار کیا تھا۔ اسلام جیسا عظم مذہب ہر قسم کی دہشت گردی سے پاک ہے۔ اگر کسی مسلمان میں کوئی خرابی یا کمزوری ہے تو اسے دعوت سے سمجھایا جاسکتا ہے۔ سیرت النبی ﷺ پر ہی عمل کرکے دہشت گردی کے ناسور پر بھی قابو پایا جاسکتا ہے۔ معاشرے کی تربیت اور اصلاح کے لیے جماعۃالدعوۃ اسی منہج کی دعوت دیتی ہے۔انہوں نے کہاکہ اسلام مخالف قوتیں مسلمانوں کے جذبہ جہاد سے پریشان ہیں۔ جہاد کے مفہوم کو غلط انداز سے پیش کرکے مسلمانوں کو دہشت گرد ثابت کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان پہلے بھی دنیا میں امن چاہتے تھے اب بھی ان کی جدوجہد کا مقصد دنیا سے ظلم کا خاتمہ کرکے امن و انصاف کی فضا قائم کرنا ہے۔ مسلمانوں کی قربانیوں سے کمیونزم کا خاتمہ ہوا۔ دنیا کو طبقاتی نظام میں تقسیم کرنے والا سرمایہ دارانہ سودی نظام بھی ناکامی کے دہانے پر کھڑا ہے ۔ حکمران آج کتاب و سنت کو ملک میں لاگو کردیں تو پاکستان دنیا میں ایک مضبوط قوت بن کر کھڑا ہوگا۔ پاکستان کے عوام اسلام کے لیے ہر قسم کی قربانی پیش کر سکتے ہیں۔ عبد الرحمن مکی نے کہا کہ دہشت گردی آج کا بڑا مسئلہ ہے۔ اس کا حل بھی نبی اکرم ﷺ کی سیرت پر عمل کرنے سے ہی ممکن ہے۔ منظم منصوبہ بندی کے تحت مسلمانوں کا کلچر بدلنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔تعلیمی اداروں میں فحاشی و عریانی کو پروان چڑھا یا جا رہا ہے۔مغرب اسے مسلمانوں کے خلاف جنگی ہتھیارکے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ علماء کرام اور دینی قائدین کو چاہیے کہ وہ قوم کی سیرت البنی ﷺ کی جانب رہنمائی کریں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4