پاکستان کی ترقی میں رخنہ ڈالنے والے عناصر تنہا ہوچکے ہیں :شہباز شریف

پاکستان کی ترقی میں رخنہ ڈالنے والے عناصر تنہا ہوچکے ہیں :شہباز شریف

 لاہور( نمائندہ خصوصی) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ 2017 ء میں ترقی و خوشحالی کے اسی سفر کو مزید تیزی سے آگے بڑھائیں گے جس کی بنیاد 2016ء میں رکھی گئی ہے اور 2017ء میں ملک کی ترقی اور عوام کی خوشحالی کی سیاست ہو گی۔ 2017ء وعدوں اور منصوبوں کی تکمیل کا سال ہے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ(ن) کی حکومت کے دور میں گزشتہ برس مختلف شعبوں میں جوتیزرفتار ترقی ہوئی ہے، اس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ توانائی سمیت دیگر ترقیاتی منصوبے انتہائی تیزرفتاری اوراعلی معیار سے پایہ تکمیل تک پہنچ رہے ہیں۔ چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کے تحت بھی متعدد منصوبے تیزی سے مکمل کئے جارہے ہیں ۔ ساہیوال میں 1320میگاواٹ کے کول پاور پراجیکٹ پر دن رات کام ہورہا ہے اور یہ منصوبہ رواں برس کے اوائل میں مکمل ہوجائے گا۔ انہوں نے کہاکہ 2017 میں احتجاج یا انتشار نہیں، صرف ترقی اورخوشحالی کی سیاست ہوگی اورجولوگ پاکستان کی ترقی اورعوام کی خوشحالی روک کر تماشا لگانا چاہتے ہیں، وہ پہلے کی طرح آئندہ بھی ناکام و نامرادرہیں گے۔ پاکستان کے باشعورعوام نے 2014 اور 2016 میں احتجاجی سیاست سے لاتعلق رہ کرمٹھی بھر سیاسی عناصر کو آئینہ دکھا دیا ہے اورالزام تراشی ،جھوٹ اوراحتجاجی سیاست اپنی موت آپ مرچکی ہے، جو لوگ عوام کی ترقی وخوشحالی کے سفر میں رخنہ ڈالنا چاہتے تھے وہ سیاسی طور پر تنہا ہو چکے ہیں۔ ترقی وخوشحالی کے دشمنوں کو اپنے طرز عمل پر نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے۔ پاکستان کے عوام صرف اور صرف ترقی و خوشحالی اور امن چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے مفادات کے سامنے ذاتی مفادات کی کوئی حیثیت نہیں اورپاکستان مسلم لیگ(ن) نے ہمیشہ اقدارکی سیاست کی ہے ۔پاکستان کی ترقی اورخوشحالی کیلئے سب کو ملکرچلنا ہے اور قوم کو اس کی کھوئی ہوئی منزل سے ہمکنا رکرنا ہے اور2017ء منصوبوں کی تکمیل کا سال ہوگا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ (ن) کے وفدسے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

شہبازشریف

لاہور )نمائندہ خصوصی) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی زیرصدارت سال نو کے پہلے روز تعطیل کے باوجود 3 گھنٹے طویل اجلاس منعقد ہوا جس میں ترکی کی وزارت صحت کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے ترک وفد کے اراکین کو سال نو کے آغاز پر مبارکباد دی اور کہا کہ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ نیا سال ہم سب کیلئے خوشیاں اور امن کا پیغام لے کر آئے۔ وزیراعلیٰ نے استنبول میں سال نو کے آغاز پر دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت کی اور اس واقعہ میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین اور ترک بہن بھائیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستان کے عوام غم کی گھڑی میں ترکی کے ساتھ کھڑے ہیں۔ دہشت گردی کا ناسور ایک بین الاقوامی مسئلہ ہے جس سے نمٹنے کیلئے ہم سب کو مل کر اقدامات کرنا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ترکی کی وزارت صحت کے تعاون سے پنجاب کے ہیلتھ کئیر سسٹم کو خوب سے خوب تر بنائیں گے۔ دکھی انسانیت کی خدمت ایک عبادت سے کم نہیں اور آج ہم نے دکھی انسانیت کی خدمت کیلئے جن اقدامات پر اتفاق کیا ہے اس کے ہیلتھ کیئر سسٹم کی بہتری پر دور رس نتائج مرتب ہوں گے۔ انہو ں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے ترک ماڈل کی طرز پر ادویات کی خریداری، ترسیل اور تقسیم کے نظام کو فول پروف بنانے کا فیصلہ کیاہے اور اس ضمن میں ادویات کا سٹیٹ آف دی آرٹ سپلائی چین مینجمنٹ سسٹم رائج کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ادویات کی سپلائی چین مینجمنٹ سسٹم کے ذریعے وسائل ضائع ہونے سے بچائے جاسکتے ہیں اور اس نظام سے مریضوں کو نہ صرف معیاری ادویات ملیں گی بلکہ خردبرد کا خاتمہ ہوگا اور غیرضروری ادویات کی خریداری کی روک تھام میں بھی مدد ملے گی۔وزیراعلیٰ نے پنجاب سیف میڈیسن سپلائی اتھارٹی کے قیام کی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ یہ اتھارٹی مکمل طو رپر خودمختار اور آزاد ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو اتھارٹی کا تنظیمی اور قانونی ڈھانچہ بنانے کیلئے فوری طو رپر اقدامات کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ نئے نظام کے تحت پائلٹ پراجیکٹ پر کم سے کم مدت میں عملدرآمد یقینی بنایا جائے۔ انہو ں نے کہا کہ معیاری ادویات مریضوں کا حق ہے جو ان کو ہر صورت دیں گے۔ نئے نظا م پر عملدرآمد سے عام آدمی اور اشرافیہ کو ایک جیسی ادویات ملیں گی۔ ادویات کو عالمی معیار کے مطابق محفوظ رکھنے کیلئے جدید ویئر ہاؤسز بنائے جائیں گے اور پہلے مرحلے میں لاہور، ملتان اور فیصل آباد میں ویئر ہاؤسز تعمیر کئے جائیں گے۔ انہو ں نے کہا کہ صوبے کے ہیلتھ کئیر سسٹم کو بہتر بنانے کے حوالے سے ترکی کا تعاون لائق تحسین ہے جس کیلئے ہم اپنے ترک بھائیوں کے شکرگزار ہیں۔ ترکی کی وزارت صحت کے ماہر نے ادویات کی سپلائی چین مینجمنٹ سسٹم کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی اور کہا کہ وزیراعلیٰ شہبازشریف کے وژن کے مطابق ادویات کی سپلائی چین مینجمنٹ سسٹم پر کم سے کم مدت میں عملدرآمد یقینی بنانے کے حوالے سے ہرممکن تعاون کریں گے۔ترک وفد میں ڈاکٹر سلامی کیلک (Dr. Selami Kilic)، ڈاکٹر حسن کاگل (Dr. Hasan Cagil) اور دیگر اعلیٰ حکام شامل تھے جبکہ ترک قونصل جنرل سردار ڈینیز (Mr. Serdar Deniz) بھی اس موقع پر موجود تھے۔صوبائی وزیر خواجہ سلمان رفیق، مشیر ڈاکٹر عمر سیف، چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری،مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما خواجہ احمد حسان، اعلیٰ حکام، طبی ماہرین اور متعلقہ افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔

مزید : صفحہ اول