یٰسین ملک کو پلوامہ سے سنٹرل جیل سری نگر منتقل کر دیا گیا

یٰسین ملک کو پلوامہ سے سنٹرل جیل سری نگر منتقل کر دیا گیا

سری نگر ( اے این این ) چیئر مین لبریشن فرنٹ یٰسین ملک کو پلوامہ سے سنٹرل جیل سری نگر منتقل کردیاگیا ٗ پولیس نے زخمی حالت میں گرفتارکرنے کے باوجود کوئی طبی سہولت مہیا نہیں کی ٗ حریت رہنما کو دس گھنٹے تک بھوکا پیاسا رکھا گیا ٗ حریت رہنماؤں کا اظہار مذمت ٗ فی الفور رہائی کا مطالبہ ٗ مسرت عالم بٹ کو بھی رہائی کے بعد دوبارہ گرفتار کرلیا گیا ٗ جوڈیشل ریمانڈ پر ڈسٹرکٹ جیل بارہمولہ منتقل ٗ ہندواڑہ میں مجاہدین کا پولیس پارٹی پر دھاوا ٗ فائرنگ سے ایک اہلکار ہلاک ہوگیا ۔ تفصیلات کے مطابق لبریشن فرنٹ کے چیئرمین یاسین ملک جنہیں گزشتہ روز تین ساتھیوں سمیت گزشتہ روز پلوامہ سے گرفتار کیا گیا تھا ،کو سرینگر سینٹرل جیل منتقل کردیا گیا ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ زخمی حالت میں گرفتار کرنے کے بعد پولیس نے انہیں اور دوسرے لوگوں کو قریب دس گھنٹے تک بھوکا پیاسا رکھنے کے بعد آدھی رات کوسینٹرل جیل پہنچایا۔ پولیس کے اس برتاؤ کو غیر انسانی قرار دیتے ہوئے حریت رہنماؤں پلوامہ میں پرامن احتجاج پربنا کسی اشتعال کے جس وحشیانہ انداز میں پولیس اور فورسز نے حملہ بول دیا اور شلنگ،فائرنگ اور لاٹھیوں کا بے دریغ استعمال کیا جس کے نتیجے میں دو درجن کے قریب لوگ زخمی ہوگئے ہیں وہ ریاستی دہشت گردی ہی کہلاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی اشتعال کے بغیر کی جانے والی یہ پولیس شلنگ اس قدر سخت تھی کہ ان کیلئے سانس لینا تک دشوار ہوگیا تھا۔پولیس تھانوں کو چھوٹے چھوٹے ابو غریب جیل قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عام لوگوں کو خوف زدہ کرنا، جوانوں ،بزرگوں،بچوں اور عورتوں کی مارپیٹ، تذلیل، ٹارچر اور تحقیر کرنا،گرفتار شدگان کے خاندانوں اور رشتہ داروں کو زیر عتاب لانا وغیرہ پولیس کا نشانِ امتیاز بن چکا ہے۔ آج سخت ترین سردی کے ایام میں ان تھانوں میں سینکڑوں جوان و بزرگ زندگی کے لئے ضروری ہر طرح کی سہولیات سے محروم رکھے جارہے ہیں اور کوئی ان کا پرسان حال نہیں اور یہ صورت حال ہماری نئی نسل کو پشت بہ دیوار کرکے بدترین تشدد کو فروغ دینے کا عمل ہے۔ادھررہائی کے فورا بعدپھر گرفتار حریت رہنما مسرت عالم کوپولیس تھانہ کوٹھی باغ سے بارہمولہ سب جیل منتقل کیاگیا۔

جبکہ پولیس نے ایک پرانے کیس کے سلسلے میں ان کے خلاف8روزہ جوڈیشل ریمانڈحاصل کیا۔مسلم لیگ نے مسرت عالم بٹ کو رہائی کے بعد دوبارہ گرفتار کر نے اور جوڈیشل ریمانڈ پر ڈسٹرکٹ جیل بارہمولہ منتقل کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ ترجمان نے بتایاکہ عدالت عالیہ کی طرف سے لیگ سربراہ کیخلاف لاگو34واں پی ایس اے کالعدم قراردئیے جانے اورموصوف کی رہائی کے احکامات صادرکئے جانے کے بعدجمعرات کومسرت عالم کورہاکیاگیالیکن پولیس نے انھیں اسی وقت پھرحراست میں لیا۔

مزید : عالمی منظر