داعش نے استنبول نائٹ کلب حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

داعش نے استنبول نائٹ کلب حملے کی ذمہ داری قبول کرلی
داعش نے استنبول نائٹ کلب حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

  

بیروت(ڈیلی پاکستان آن لائن)داعش نے استنبول نائٹ کلب حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے۔خبررساں ایجنسی رائٹر زکے مطابق داعش نے اپنے ٹیلیگرام چینل پر جاری کیے گئے بیان میں اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔بیان میں داعش نے کہا کہ” وہ اپنے اچھے مقصد کو جاری رکھتے ہوئے یہ حملہ ان لوگوں پر کیا گیا ہے جو عیاسیت کی نشانی کراس کے محافظ ہیں۔ نائٹ کلب میں عیسائی موجود تھے“۔ خبر رساں ایجنسی کے مطابق سال نو کے پہلے روز ترکی کے شہر استبول کے نائٹ کلب میں سانتا کلاز کا روپ دھارے شخص نے فائرنگ کرکہ 39 افراد کو موت کے گھاٹ اتاردیا تھا جبکہ69 افراد زخمی ہوگئے تھے۔کلب حملے میں کم از کم 15 غیر ملکی بھی جان کی بازی ہار گئے تھے۔جن کا تعلق سعودی عرب،مراکش ،لبنان،لیبیا،اسرائیل،بھارت اور بیلجیئم جبکہ ہلاک ہونیوالوں میں دو فرانس اور تنزانیہ کے شہری بھی شامل ہیں ترکی نیٹو کا اتحادی ہے جو کہ امریکہ کے زیر کنٹرول کام کرتی ہے اور داعش کیخلاف آپریشن شام میں شروع کیا گیاہے ۔حکام کے مطابق حملہ آور وسطی ایشیاءکا رہائشی ہوسکتا ہے۔ جس کا تعلق داعش کیساتھ تھا۔ تریکی کے اخبار حریت کے مطابق پولیس نے حملہ آور کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں سے بلیک اینڈ وائٹ تصویر لی ہے۔

مزید : بین الاقوامی