ہائی کورٹ :بیلف سے بدتمیز ی کیس ،ڈی پی او حافظ آباد کے بعد آر پی او بھی طلب

ہائی کورٹ :بیلف سے بدتمیز ی کیس ،ڈی پی او حافظ آباد کے بعد آر پی او بھی طلب
ہائی کورٹ :بیلف سے بدتمیز ی کیس ،ڈی پی او حافظ آباد کے بعد آر پی او بھی طلب

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی نے عدالتی بیلف پر تھانے میں تشدد کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ آر پی او کو آج 3جنوری کوطلب کر لیا ہے۔

قبل ازیں عدالتی حکم پر ڈی پی او حافظ آباد پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ بیلف سے بدتمیزی کرنے والے ایس ایچ او کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ تاہم عدالت نے آر پی او کو طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔ جسٹس سید مظاہرعلی اکبر نقوی نے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کی طرف سے بھجوائے گئے معاملے پر سماعت کی، چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے عدالتی بیلف پر تشدد کا انتظامی سطح پر نوٹس لیتے ہوئے اسے درخواست میں تبدیل کر کے سماعت کیلئے جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کو بھجوایا تھا۔

جس پر عدالت نے ڈی پی او حافظ آباد کو متعلقہ پولیس افسروں سمیت پیش ہونے کا حکم دیا، سیشن جج حافظ آباد کی طرف سے بھجوائی گئی رپورٹ میں کہا گیا کہ بیس دسمبر کو شہری صفدر علی کی جانب سے درخواست موصول ہوئی کہ ایس ایچ او جلال پور بھٹیاں نے اختر علی سمیت دس افراد کو غیر قانونی طور پر تھانے میں بند کر رکھا ہے جنہیں بازیاب کروایا جائے۔ عدالت نے سٹینو گرافر محمد منیر پر مشتمل عدالتی بیلف نامزد کیا جو درخواست گزار کے ہمراہ مذکورہ تھانے پہنچے۔ عدالتی بیلف نے تھانے کے محرر کو اپنا تعارف کروایا اور اس سے ایف آئی آر رجسٹر اور ڈیلی ڈائری رجسٹر وصول کئے،اسی وقت درخواست گزار نے بیلف کو ایک مقید نور حسین کی موجود گی کے بارے میں مطلع کیا جس پر وہاں موجود پولیس اہلکار متحرک ہوگئے اور بیلف کے ہاتھ میں موجود رجسٹر اور عدالتی کاغذات بھی چھین لئے اور بیلف کو تشدد کا نشانہ بنایا۔

مزید : لاہور