پنجاب‘ پہلی بار اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کی موبائل ایپ متعارف 

پنجاب‘ پہلی بار اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کی موبائل ایپ متعارف 

  



ڈیرہ غازیخان (سٹی رپورٹر):حکومت پنجاب نے ملک میں پہلی بار انٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کی موبائل ایپ متعارف کرا دی ہے جس کے ذریعے شہری گھر بیٹھے آن لائن طریقے سے سرکاری محکموں میں بدعنوانی، ترقیاتی منصوبوں میں کرپشن اور انتظامی معاملات سے متعلق شکایات درج کرا سکتے ہیں  ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن حمزہ سالک نے اپنے دفتر میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت(بقیہ نمبر55صفحہ12پر)

 کرتے ہوئے کہا کہ "رپورٹ کرپشن ایپ"  کے ذریعے کوئی بھی شہری دفتر کے بار بار چکر لگائے بغیر اپنے موبائل کے ذریعے درخواست دے سکتا ہے۔  انہوں نے بتایا کہ 9 دسمبر سے اب تک موبائل ایپ کے ذریعے ڈیرہ غازی خان ریجن سے متعلق 55 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 37 نمٹا دی گئی ہیں اور 18 پر کام جاری ہے  انہوں نے بتایا کہ سال  2019ء کے دوران  ڈیرہ غازی خان ریجن سے متعلق 1829 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے  1486 کو حل کر لیا گیا اسی طرح 900 انکوائریز شروع کی گئی جن میں سے 469  نمٹادی گئیں، 196 کیسز کا اندراج ہوا اور 141 کیسز پر کارروائی مکمل کی گئی۔ریجنل ڈائریکٹر انٹی کرپشن حمزہ سالک نے بتایا کہ گزشتہ سال کے دوران ریجن سے ایک کھرب 54 کروڑ 46 لاکھ روپے کی ریکوری کی گئی،آٹھ ارب 28 کروڑ دس لاکھ روپے مالیت کا 1030225 کنال سرکاری رقبہ واگزار کرایا گیاریجنل ڈائریکٹرنے بتایا کہ سال 2019 کے دوران 23 اشتہاری،18 عدالتی مفرور سمیت 41 ملزمان،9گزیٹیڈ افسران،205 نان گزٹیڈ و پرائیویٹ افراد سمیت 214 کو رنگے ہاتھوں گرفتار کیا گیا۔رنگے ہاتھوں ریڈ میں 197000 روپے برآمد کئے گئے۔سال کے دوران145 کیسز کی تحقیقات مکمل کرکے چالان کیا گیا۔  ریجنل ڈائریکٹر نے کہا کہ عادی اور پیشہ ور درخوست گزاروں کی حوصلہ شکنی کے ساتھ قید کی سزا دلانے کیلئے قانون سازی پر کام کیا جارہا ہے۔اس موقع پر اسسٹنٹ ڈائریکٹر آئی ٹی اعجاز حیدر خان نے موبائل ایپ کے بارے میں بریفنگ دی۔

متعارف 

مزید : ملتان صفحہ آخر