محکمہ ایکسائز‘ مختلف شعبہ جات کی  ششماہی ٹیکس ریکوری رپورٹ آگئی

محکمہ ایکسائز‘ مختلف شعبہ جات کی  ششماہی ٹیکس ریکوری رپورٹ آگئی

  



ملتان (نیوز رپورٹر) محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ملتان ڈویڑن کی جانب سے مختلف شعبہ جات کی ششماہی ٹیکس ریکوری رپورٹ جاری کردی ہے محکمہ کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق رواں مالی سال جولائی تا دسمبر 2019ء تک پراپرٹی ٹیکس، پروفیشنل ٹیکس اور تفریحی ٹیکس وصولی میں (بقیہ نمبر29صفحہ12پر)

مقررہ ٹیکس اہداف سے زائد وصولی کی ہے تاہم موٹر ٹیکس اور ایکسائز ڈیوٹی کے مقررہ اہداف کے حصول میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا ہے جس کی وجہ ڈالر کی قدر میں اضافہ سے قیمتیں بڑھنے اور ٹیکسز میں اضافہ ہونے کے باعث شہریوں کی جانب سے گاڑیوں کی خریداری  کے رجحان میں کمی آنا قرار دیا ہے ذرائع کے مطابق پراپرٹی ٹیکس کا ششماہی ہدف 47 کروڑ 78 لاکھ روپے جبکہ محکمہ نے 54 کروڑ 53 لاکھ روپے کی ریکوری کرلی ہے جو مقررہ ہدف سے 17 فیصد زائد ہے تفریحی ٹیکس 28 لاکھ 77 ہزار روپے جو مقررہ ہدف سے 14 فیصد زائد ہے موٹر ٹیکس 41 کروڑ 85 لاکھ 30 ہزار پروفیشنل ٹیکس 4 کروڑ 29 لاکھ 95 ہزار روپے کاٹن فیس 2 کروڑ 91 لاکھ 18 ہزار روپے ایکسائز ڈیوٹی 1 کروڑ 38 لاکھ 27 ہزار روپے اور لگڑری ہاوس ٹیکس 11 لاکھ 50 ہزار روپے کی ریکوری ہوئی ہے ڈائریکٹر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ملتان عبداللہ خان جلبانی نے کہا ہے کہ نئے سال کے جنوری سے ٹیکس نادہندگان کے خلاف کاروائی کے لئیے سکواڈ تشکیل دیئے جاچکے ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر نادہندگان کے خلاف کریک ڈاون کے دوران پراپرٹیز کی سیلنگ، جائیداد کی قرقی، وارنٹ گرفتاری سمیت تمام ممکنہ وسائل بروے کار لائے جائیں گے جن سے حکومتی محاصل کی ریکوری کو یقینی بنایا جاسکتا ہے انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کی جانب سے ٹیکس پالیسی میں نرمی لانے کے باعث کاروباری برادری کو ریلیف ملے گا جس سے کاروباری سرگرمیوں میں تیزی آنے سے موٹر برانچ بھی جو اس وقت جمود کی کیفیت طاری ہے وہ نہیں رہے گی گاڑیوں کی خریداری میں بھی اضافہ ہونے سے موٹر برانچ کے مقررہ ہدف کا شارٹ فال مالی سال کے اختتام پر مکمل کرلیا جائے گا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر