کراچی، اورنگی ٹاؤن میں قبضہ مافیا کا راج، میٹر نئی ہوم کے پلاٹ پر شادی ہال تعمیر 

کراچی، اورنگی ٹاؤن میں قبضہ مافیا کا راج، میٹر نئی ہوم کے پلاٹ پر شادی ہال ...

  



کراچی (رپورٹ/ندیم آرائیں)کراچی کے علاقے اورنگی ٹاؤن میں قبضہ مافیا نے بلدیہ عظمیٰ کراچی اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسران کی ملی بھگت سے چار پلاٹوں کی ایک ہی لیز حاصل کرکے ساتھ میں موجود ایس ٹی پلاٹ پر بھی قبضہ کرکے شادی ہال تعمیر کرادیا۔میٹرنٹی ہوم کے لیے مختص پلاٹ پر  قبضہ کرکے شادی ہال کی تعمیر کے حوالے سے متعلقہ افسران نے اپنی آنکھیں بند کرلیں جبکہ علاقہ پولیس نے بھی مبینہ طور پر بھاری رشوت کے عوض خاموشی اختیار کی ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں جرائم پیشہ عناصر کے خلاف شروع کیے گئے آپریشن کے نتیجے میں امن و امان کی صورت حال میں بہتری توآئی ہے لیکن قبضہ مافیا نے پورے شہرمیں اپنے پنجے گاڑھ لیے ہیں۔ان عناصر کو بلدیہ عظمی کراچی اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی مکمل سرپرستی حاصل ہے،جس کی وجہ سے وہ دیدہ دلیری کے ساتھ مختلف علاقوں میں غیر قانونی تعمیرا ت جاری رکھے ہوئے ہیں۔اس ضمن میں ذرائع نے بتایا کہ اورنگی ٹاؤن کے علاقے میں غیر قانونی شادی ہالزکی تعمیرات کا کام عروج پر ہے اور قبضہ مافیا اس قدر بااثر ہے کہ اانہوں نے اورنگی ٹاؤن کے علاقے سیکٹر 13-Gمیں  موجود 166.66گز کے چار پلاٹوں  LS-2,LS-3,LS-4,LS-5کوکے ایم سی سے ایک ہی لیز حاصل کرکے اسے 666.64گز کے پلاٹ میں تبدیل کر کے 2سال قبل  ایس بی سی اے سے گراؤنڈ پلس ون کی تعمیرات کرنے کی اجازت  لیکر اپنے پلاٹ  کے ساتھ میٹرنٹی ہوم کے لیے مختص تقریبا13سو گز کی زمین پر بھی قبضہ کرکے   اس پر الحبیب بینکویٹ کے نام سے شادی ہال تعمیر  کردیا تھا اور دھڑلے سے اس غیر قانونی شادی ہال شادی بیاہ کی تقریبات کے لیے استعمال کیا جارہا تھا  ،علاقہ مکینوں کی درخواست پر  6یا سات ماہ قبل ایس بی سی اے نے  نمائشی کارروائی کرتے ہوے مذکورہ شادی ہال کو معمولی توڑ پھوڑ کرکے منہدم کیا تھا،شادی ہال کے مالک نے ایس بی سی اے کے کرپٹ افسران کو بھاری نذرانہ دے کر دوبارہ تعمیر کرکے کام شروع کردیا،علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ ہم اعلیٰ حکام سے اپیل کرتے ہیں کہ جہاں جہاں سرکاری اراضی پر قبضہ مافیا نیقبضہ کیا ہوا ہے اسے فوری واہگزار کرایا جائے اور مذکورہ شادی ہال کے خلاف فوری کارروائی کرتے ہوئے اس میں ملوث  افراد کو گرفتار کیا جائے اور اسپلاٹ کی غیر قانونی لیز دینے والے کے ایم سی افسران اور غیر قانونی شادی ہال کی تعمیر کے دوران آنکھیں بند رکھنے والے ا یس بی سی اے کے کرپٹ افسران کے خلاف انکوائری کی جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...