انسداد کرنسی سمگلنگ کیلئے ”ٹیکس لا“ سکینڈ ترمیمی آرڈیننس نافذ

      انسداد کرنسی سمگلنگ کیلئے ”ٹیکس لا“ سکینڈ ترمیمی آرڈیننس نافذ

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) کرنسی اور قیمتی اشیا کی سمگلنگ کی روک تھام کیلئے حکومت کا ایکشن، ''ٹیکس لا سیکنڈ'' ترمیمی آرڈیننس نافذ کر دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے اہداف کے حصول کیلئے ٹیکس لا سیکنڈ ترمیمی آرڈیننس 2019ء کا اطلاق 26 دسمبر سے کر دیا ہے۔آرڈیننس کے مطابق کرنسی اور قیمتی اشیا کی سمگلنگ کی روک تھام کیلئے بیرون ملک 15 تولے سے زیادہ سونا اور 10 ہزار سے زائد ڈالر لے جانے پر جرمانہ عائد کر دیا جائے گا۔ اس کے علاوہ بیرون ملک 20 ہزار سے زائد ڈالر لے جانے پر 75 ہزار ڈالر، 50 ہزار سے ڈالر لے جانے پر ڈیڑھ لاکھ ڈالر جرمانہ عائد ہوگا۔ترجمان ایف بی آر کا کہنا ہے کہ اس آرڈیننس کا اطلاق ایان علی پر ہوگا یا نہیں؟ اس کا فیصلہ عدالت کرے گی۔ آرڈیننس کا مسودہ پارلیمنٹ کو بھجوا دیا گیا ہے۔ نان رجسٹرڈ ریٹیلرز کو سالانہ ایک کروڑ سے زائد کا سامان نہیں ملے گا۔ سیلز ٹیکس کی رجسٹریشن کیلئے سالانہ 6 لاکھ کی بجائے 12 لاکھ کا بجلی بل لازمی قرار دیدیا گیا ہے۔ دریں اثناء ٹیکس قوانین ترمیمی آرڈیننس کے تحت کرنسی کی اسمگلنگ اور  دہشت گردی کے لئے مالی معاونت کرنے میں ملوث عناصر کو سزائیں دینے کی تفصیلات جاری کردی گئی ہیں۔ایکسپریس نیوز کے مطابق  ٹیکس قوانین ترمیمی آرڈیننس کے تحت کرنسی اسمگلنگ اور ٹیر رازم فنانسنگ میں ملوث عناصر کو سزائیں دینے کی تفصیلات جاری کردی گئی ہیں، ترمیمی آرڈیننس ایف اے ٹی ایف کی سفارشات پرعمل کیلئے جاری کیا گیا ہے۔آرڈیننس کے تحت جو کرنسی پکڑی جائے گی اسے ضبط  کرلیا جائے گا، اسمگلنگ کرنے والے شخص کو بھی حراست میں لے لیاجائے گا اور اس پر پکڑی جانے والی مالیت کے برابر ہی جرمانہ بھی عائد ہوگا۔آرڈیننس میں کرنسی سے متعلق تفصیلات میں کہا گیا ہے کہ  10 ہزار ڈالرز سے زائد رقم بیرون ملک لے جانے پر بھاری جرمانہ اورسزائیں ہوں گی، 10 ہزار ایک ڈالر سے 20 ہزار ڈالر تک کرنسی باہرلے جانے پر کرنسی ضبط ہوگی جس پر دوگناجرمانہ عائد ہوگا، 20 ہزار ایک ڈالر سے 50 ہزار ڈالر تک کرنسی  لے جانے  پر دو سال قید اور جرمانہ، 50 ہزار ایک ڈالر سے ایک لاکھ ڈالر تک کرنسی بیرون ملک لے جانے پر 7 سال سزا، چار گناجرمانہ، ایک لاکھ  ایک ڈالر سے 2 لاکھ  ڈالر تک لے جانے والی کرنسی ضبط، 5 گناجرمانہ اور 3 سے 10 سال تک قید جب کہ 2 لاکھ ایک  ڈالر سے زائد کی رقم لے جانے پر کرنسی ضبط، 10 گناجرمانہ اور5 سے 14 سال تک کی قید ہوگی۔آرڈیننس میں قیمتی اشیا مثلاً سونا،چاندی، قیمتی پتھر سمیت دیگر قیمتوں دھاتوں کی اسمگلنگ پر سزا وجرمانہ ہوگا جس کی تفصیلات میں بتایا گیا ہے کہ اسمگلنگ کی مد میں پکڑی جانے والی تمام اشیاء  ضبط کرلی جائیں گی۔15 تولے سونا یا اس کی مالیت کے برابر چاندی، پلاٹینیم برآمد ہونے پر ضبط اوراتنا ہی جرمانہ ہوگا، اور اس سے زائد 16 تولے سے 30 تولے تک لے جانے پر ضبط اور دوگناجرمانہ، 31 سے 50 تولے سونا لے جانے  پر ضبط، 3 گنا جرمانہ اور ایک سال قید، 51 سے 100 تولے سونا لے جانے پر ضبط، 3 گنا جرمانہ اور 3 سال قید، 101 سے 200 تولے سونا لے جانے  پر ضبط، 4 گناجرمانہ اور 5 سال قید، 201 سے لے کر 500 تولے تک سونا لے جانے پر ضبط، 5 گناجرمانہ، کم سے کم 3 سال اور زیادہ سے زیادہ 10 سال تک قید اور 500 تولہ سے زائد سونا لے جانے پر ضبط، 10 گناجرمانہ اور کم سے کم 5 سال اور زیادہ سے زیادہ 14 سال تک قید ہوگی۔انفرادی افراد سے بغیر این ٹی این نمبر اور سیلز ٹیکس رجسٹریشن نمبر کے کوریئر، ایئر کارگو، ڈپلومیٹک کارگو, وفاقی و صوبائی اور لوکل گورنمنٹس کے ذریعے امپورٹ اور گفٹ پر جرمانوں کا اطلاق نہیں ہوگا۔

آرڈی نینس

انسداد کرنسی آرڈی نینس

مزید : صفحہ اول