حکومت نوجوانوں کو با اختیار بنانے کیلئے کوشاں ہے،شفقت محمود

حکومت نوجوانوں کو با اختیار بنانے کیلئے کوشاں ہے،شفقت محمود

  



اسلام آباد(آن لائن) موجودہ حکومت پاکستان ہنرمندی کے شعبے میں اصلاحات کے لئے پوری طرح پرعزم ہے جو نہ صرف ہمارے نوجوانوں بلکہ ملک کے خوشحال مستقبل کو بھی یقینی بنائے گی۔ یہ بات وفاقی وزیر برائے تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت شفقت محمود نے اسلام آباد میں نیشنل ووکیشنل اینڈ ٹیکنیکل ٹریننگ کمیشن (نیوٹک)کی نئی تعمیر شدہ عمارت کے دورے کے دوران کہی۔چیئر مین سید جاوید حسین اور ایگزیکٹو ڈائریکٹر نیوٹیک ڈاکٹر ناصر خان نے اس موقع پروفاقی وزیر کو ہنر مندپاکستان پروگرام کے 14نکات کے بارے میں آگاہ کیا، جس کے تحت نیوٹیک ملک کے ہنر مندی کے شعبے میں اصلاحات کے ایک جامع منصوبہ پر عمل پیرا ہے، تا کہ ملک کے نوجوانوں کو مقامی اور بین الاقوامی جاب مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق اعلٰی تربیت فراہم کی جاسکے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ ہنرمند پاکستان اپنی نوعیت کا ایک منفرد بڑے پیمانے کا پروگرام ہے جس کا مقصد ہمارے نوجوانوں کو ہنر مند بنانا ہے تا کہ وہ انفرادی ترقی کے ساتھ ساتھ اپنے ملک کی ترقی میں بھی فعال کردار ادا کر سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ نیوٹیک کے لئے یہ ایک موقع بھی ہے اور چیلنج بھی ہے کہ وہ ملک میں فعال انداز میں ہنرکے شعبے میں اصلاحات لائے۔ وفاقی وزیر نے یکساں سرٹیفکیشن ریجیم پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ گولڈ سٹینڈرڈ کے معیار پر کام کریگااور اسے مقامی اور بین الاقوامی مارکیٹ میں بھی تسلیم کیا جائے گا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ میرٹ اور شفافیت پر مبنی بہترینTVETاداروں کا انتخاب ہی ہنر مند پاکستان پروگرام کی کامیابی کا ضامن ہے۔ "ہماری تمام تر توجہ بہترین معیار کی ہنر و پیشہ وارانہ تعلیم و تربیت کی فراہمی پر ہے، جوزیادہ سے زیادہ گریجویٹس کو نوکریاں فراہم کرنے میں مددگار ثابت ہو گی نیوٹیک کے چیئر مین سید جاوید حسن صاحب نے بتایا۔یہ عظیم منصوبہ پاکستان کے TVET سیکٹر کے اصلاحاتی ایجنڈے کی عکاسی کرتا ہے، اور ملک بھر سے ٹی ویٹ کے اسٹیک ہولڈرز کی طرف سے وسیع تر غور و فکر اور آراء کے بعد اس کو تشکیل دیا گیا ہے جس میں تکنیکی اور پیشہ ورانہ تعلیم سے متعلق ٹاسک فورس کے روڈ میپ میں تجویز کردہ تمام آٹھ نکات کو شامل کیا گیا ہے۔اس پروگرام کے کلیدی اجزاء میں 200 تکنیکی اور پیشہ ورانہ کوالفیکشن کی تشکیل،50 پاکستانی TVET اداروں کی بین الاقوامی اداروں کے ساتھ ایکریڈیٹیشن، نیشنل ایکسچینج پورٹل کے ساتھ نیوٹیک کی جاب پورٹل میں توسیع، ورچوئل ہنر کی ترقی کے پروگراموں کے لئے 75 سمارٹ ٹیک لیبز کا قیام منتخب شدہ ممالک کی ضروریات کے مطابق 10خصوصی سہولت مراکز کا قیام، مدارس میں 70 لیبز / ورکشاپس کا قیام ملک کے کم ترقی یافتہ علاقوں سے تعلق رکھنے والے 50000 نوجوانوں کو تربیت بشمول بلوچستان، گلگت بلتستان،آزاد جموں و کشمیر، اور خیبر پختونخواہ (سابق فاٹا)، جنوبی پنجاب اور دیہی سندھ کے نئے شامل اضلاع۔ اپرینٹس سپ ایکٹ 2018 کے تحت صنعت میں 20000 نوجوانوں کو اپرنٹس شپ کی فراہمی، غیر رسمی طریقے سے کارکنوں کو قومی دھارے میں لانے کے لئے 50000 نوجوانوں Recongnition Prior Learning کے تخت شمولیت، اسلام آباد میں قومی ہنر ایکریڈیشن کونسل کا قیام، ملک بھر میں 2000 اداروں کی accreditation،ہنر مند نوجوانوں میں روزگار اور اپنا کاروبار شروع کرنے کے حوالے سے 50 انکیوبیشن سنٹرز کا قیام وغیرہ شامل ہیں۔وفاقی وزیر نے پاکستان کے TVET سیکٹر کو ترقی دینے کے اقدام کے لئے کی جانے والی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ اس پروگرام پر موثر عملدرآمد سے ملک میں فنی ترقی کے شعبے کو فروغ ملے گا۔ اس موقع پر شفقت محمود نے نیوٹیک کی نئی عمارت میں ایک پودا بھی لگایا۔

شفقت محمود

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر